امریکہ کے سامنے مزاحمت، ایران کا حتمی آپشن ہے: آیت اللہ خامنہ ای

تہران، 14 مئی، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کے سپریم لیڈر نے فرمایا ہے کہ امریکہ کے سامنے مزاحمت، ایران کا حتمی آپشن ہے اور اس مقابلے میں امریکہ پییچھے ہٹنے پر مجبور ہوجائے گا، یہ کوئی فوجی مقابلہ نہیں کیونکہ کوئی بھی جنگ وقوع پذیر نہیں ہوگی-

ان خیالات کا اظہار قائد اسلامی انقلاب حضرت آیت اللہ خامنہ ای نے منگل کے روز ملک کے اعلی عہدیداروں کیساتھ ایک ملاقات میں کیا۔
انہوں نے مزید فرمایا کہ نہ ایران جنگ کا خواہاں ہے اور نہ امریکہ کیونکہ وہ جانتے ہیں کہ جنگ ان کے مفادات میں نہیں ہے۔
ایرانی سپریم لیڈر نے فرمایا کہ یہ مقابلہ در اصل عزم اور ارادوں کا مقابلہ ہے اور ہمارا عزم اور ارادہ ان سے مزید مضبوط ہے کیونکہ ہم اپنے مضبوط ارادے سمیت اللہ تعالی پر بھروسہ کرتے ہیں۔
انہوں نے مزید فرمایا کہ ملک کے اندر بعض لوگوں کا کہنا ہے کہ مذاکرات کا کیا عیب ہے؟ میں کہتا ہوں کہ مذاکرہ زہر ہے؛ جب تک امریکی انتظامیہ یہی ہے تو اس کیساتھ مذاکرہ کرنا زہر لگتا ہے۔
ایرانی سپریم لیڈر نے فرمایا کہ امریکی حکام کہتے ہیں کہ آئیں اور خطے میں اپنی پالیسیوں کا سرانجام یا کہ ایران کے میزائلی پروگرامز کی وجوہات کے بارے میں بات چت کریں۔ ظاہر ہے کہ کوئی بھی عقلمند ایرانی جانتا ہے کہ طاقت پر مذاکرات کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔
انہوں نے مزید فرمایا کہ در اصل امریکہ کے ساتھ مذاکرات غلط کام ہے حتی کہ ان کے عقلمند حکام کیساتھ، حالانکہ ٹرمپ انتظامیہ کے حکام تو عقلمند بھی نہیں ہیں اور انھیں کسی بات پر پابندی نہیں ہے البتہ ہمارے عقلمند حکام بھی مذکرات کے خواہاں نہیں ہیں۔
9467**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@