بھارت، الیکشن کے بعد ایران سے تیل خریدنے کا فیصلہ کرےگا

نئی دہلی،14 مئی، ارنا- بھارت نے کہا ہے کہ وہ ملک میں ہونے والے الیکشن کے بعد ایران سے تیل خریدنے کے حوالے سے فیصلہ کرے گا۔

بھارتی "ANI" نیوز ایجنسی نے ملک کے ایک باخبرعہدیدار کے مطابق کہا ہے کہ بھارتی وزیر خارجہ "سمشا سوراج" نے اپنے ایرانی ہم منصب "محمد جواد ظریف" کیساتھ ایک ملاقات میں کہا ہے کہ ان کا ملک، تجارتی صورتحال، معاشی مفادات اور توانائی تحفظ کے مطابق ایران سے تیل خریدنے کے حوالے سے فیصلہ کرے گا۔
بھارتی عہدیدار نے کہا ہے کہ ایرانی وزیر خارجہ نے سشما سوراج کیساتھ اپنی ملاقات میں ہیوی واٹر اور افزودہ یورنیم کی فروخت کے حوالے سے ایرانی صدر کے حالیہ فیصلے کے بارے میں وضاحتیں پیش کی ہیں۔
انہوں مزید کہا کہ ایران نے یورپی ممالک اور جوہری معاہدے کے دوسرے اراکین کو تیل اور بینکنگ تعلقات کی صورتحال کی بحالی کے حوالے سے 60 روزہ الٹی میٹم دے دیا ہے۔
اس موقع پر بھارتی وزیر خارجہ نے ایران جوہری معاہدے کے سارے رکن ممالک سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اپنے کیے گیئے وعدوں پر قائم رہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ سارے فریقین کو ایک دوسرے کیساتھ بدستور رابطے میں ہوکر موجودہ مسائل کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنا چاہیے۔
اس کے علاوہ ایران اور بھارت کے وزرائے خارجہ نے افغان مسئلہ اور خطی مسائل کے حوالے سے مزید تعاون سے اتفاق کیا ہے۔
واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے کے دوران امریکی وزیر تجارت نے بھارت کا دورہ کیا تھا تا کہ اس ملک کو ایران کیساتھ تجارت کرنے سے منع کرے۔
یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایرانی وزیر خارجہ، گزشتہ رات بھارتی دارالحکومت نئی دہلی پہنچ گئے۔ انہوں نے دورہ بھارت سے پہلے روس، چین، عراق اور ترکمانستان کا دورہ کرتے ہوئے ان ملکوں کے حکام سے باہمی تعلقات اور جوہری معاہدے سے متعلق بات چیت کی۔
9467**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@