ایران میں امریکی پابندیوں کے باوجود معدنیات کی برآمدات جاری

تہران، 14 مئی، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران میں کان کنی کی صنعت پر حالیہ امریکی پابندیاں کوئی نئی بات نہیں بلکہ ماضی میں بھی یہ سلسلہ رہا ہے تاہم اس کے باوجود ایران سے معدنیات کی برآمدات بدستور جاری ہیں.

ایران مائننگ ہاؤس کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے ایک رکن کے مطابق، نئی امریکی پابندیوں سے کان کنی صنعت پر کوئی فرق نہیں پڑا بلکہ نان آئیل مصنوعات کے تناظر میں معدنیات کی بیرون ملک ترسیل جاری ہے.
بہرام شکوری نے ارنا نیوز کے نمائندے سے گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ پابندیوں کے دور میں ایران نے اپنی کان کنی مصنوعات کی برآمدات کو بدستور جاری رکھا ہوا ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران میں کان کنی اور اس سے پیدا ہونے والی مصنوعات کے شعبوں میں زیادہ تر نجی کمپنیاں سرگرم ہیں. نجی شعبے نے برآمدات میں اضافے کے لئے موثر طریقہ کار کی تلاش کی ہے جس کا سلسلہ حالیہ صورتحال میں بھی جاری ہے.
شکوری کے مطابق، ایران کی نان آئل مصنوعات برآمدات میں 25 فیصد معدنیات کی ہیں. پابندیوں کے دور میں معدنیات کی برآمدات کا رسک زیادہ ہے مگر اس کے امکانات موجود ہیں.
انہوں نے مزید کہا کہ ماضی کے اعداد و شمار کو اگر دیکھیں تو معدنیات کی برآمدات سے ایران کو 12 سے 15 ارب ڈالر کی آمدنی حاصل ہوئی ہے.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے گزشتہ سال 117.228 ملین ٹن نان آئل مصنوعات برآمد کیں جن کی مالیت 44.310 ارب ڈالر ہے.
9410٭274٭٭
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@