ایرانی قرہ چرچ فرانسیسی دستاویزی ڈائرئکٹروں کا موضوع بن گیا

ارومیہ، 13 مئی، ارنا – فرانسیسی فلم سازوں نے ایرانی مغربی علاقے ارومیہ میں تاریخی قرہ چرچ پر ایک دستاویزی فلم بنائی ہے جسے RT چینل میں نشر کی جاتی ہے.

یہ بات ایرانی صوبے مغربی آذربائیجان کے ثقافتی ورثے، دستکاری صنعت اور سیاحت کے ادارے کے منیجنگ ڈائریکٹر جلیل جباری" ںے اتوار کے روز ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ "بون پیوش" فلم سازی انسٹی ٹیوٹ نے اس دستاویزی فلم کی فلمنگ کی ہے.
جباری نے کہا کہ فرانسیسی بون پیوش فلم سازی انسٹی ٹیوٹ ایرانی ثقافتی ورثے بالخصوص صوبے مغربی آذربائیجان پر دستاویزی فلمیں بناتا ہے.
تفصیلات کے مطابق، قرہ چرچ ایک آذری لفظ ہے جس کا معنی بلیک یا تادئوس چرچ (St. Thaddeus Monastery) ہے. یہ چرچ ایرانی صوبے آذربائیجان غربی کے شہر ارومیہ میں واقع ہے جو سیاہ اور سفید پتھروں اور خوبصورت گنبدوں کی وجہ سے دنیا کے سب سے دلکش اور قدیم ترین کلیساوں میں سے ایک ہے.
قرہ چرچ 40 یا 43 عیسوی سالوں میں قائم ہوا ہے جو ایران کا پہلا چرچ اور عیسائی برادری کے سب سے پہلے اور پرانی گرجاگھروں میں سے ایک ہے.
یہ چرچ عیسائیت کی دنیا میں سب سے قیمتی مذہبی عمارتوں میں سے ایک ہے.
یہ تاریخی اور حسین عمارت، اشکانیان کے دور حکومت میں ارومیہ کے علاقے چالدران میں تعمیر کی گئی جس کو 2008 میں یونیسکو کے عالمی ثقافتی ورثے کی فہرست میں شامل کیا گیا.
274*9393**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@