بین الاقوامی تعلقات میں اعتدال پسندی اور منطقی رویے کی بالادستی کے خواہاں ہیں: ایرانی صدر

تہران، 6 مئی، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران نے امیر قطر کیساتھ ایک ٹیلی فونک رابطے کے دوران، ایران اور قطر کے درمیان بڑھتے ہوئے دوستانہ اور برادرانہ تعلقات کو دونوں ملکوں سمیت علاقے کے مفادات میں قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہم بین الاقوامی تعلقات میں اعتدال پسندی اور منطقی رویے کی بالادستی کے خواہاں ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ایرانی صدر مملکت ڈاکٹر"حسن روحانی" نے پیر کی رات امیر قطر"شیخ تمیم بن حمد آل ثانی" کیساتھ ایک ٹیلی فونک رابطہ کیا۔
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران، خطے کے سارے ممالک بالخصوص قطر کیساتھ تعلقات کے فروغ پر دلچسبی رکھتا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ ایران اور قطر کے درمیان سیاسی اور معاشی شعبوں میں تعلقات کی توسیع کی راہ میں کوئی رکاوٹ نہیں ہے۔
صدر روحانی کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران، خطے میں پایدار قیام امن و سلامتی کے حوالےسے ہر ممکنہ اقدام اٹھانے کیلئے تیار ہے۔
انہوں نے اس امید کا اظہار کردیا کہ خطے کے سارے مسائل مذاکرات اور سیاسی طریقوں سے حل ہوجائیں گے۔
ایرانی صدر نے رمضان المبارک میہنے کی آمد پر قطری حکومت اورعوام بالخصوص امیر قطر کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا ایران نے مشکل حالات میں ثابت کردیا ہے کہ اپنے قطری بھائیوں کیساتھ کھڑا ہوکر دوست برادر ملک کیساتھ باہمی تعاون کے سلسلہ کو جاری رکھنے پر تیار ہے۔
انہوں نے بین الاقوامی تعلقات میں اعتدال پسندی اور منطقی رویوں کی بالادستی پر زوردیتے ہوئے کہا کہ امریکی غیر قانونی اقدامات، خطے کی حالیہ تبدیلیوں پر برے اثرات مرتب کریں گے اور خطی ممالک کو بھی مشکل صورتحال کا شکار کریں گے۔
انہوں نے کہا کہ ایرانی تیل کیخلاف امریکی پابندیوں کا اصل مقصد خطے میں عدم استحکام پھیلانا ہے لہذا ہمیں امید ہے کہ خطی ممالک کے درمیان دوستانہ تعاون سے علاقے میں پایدار قیام امن و استحکام قائم ہوگا۔
صدر روحانی نے رمضان المبارک مہینے کے موقع پر مقبوضہ فلسطین میں ناجائز صہیونی ریاست کے حالیہ حملے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی ممالک کو ایک دوسرے کیساتھ یکجہتی اور اتحاد سے ناجائز صہیونی ریاست پر دباؤ ڈال کر اس جابر ریاست کے ہاتھوں سے مظلوم نہتے فلسطینی عوام کے قتل کو روک دینا چاہیے۔
اس موقع پر امیر قطر نے رمضان الکریم مہینے کی آمد پر ایرانی عوام اور حکومت کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے قطر کے حوالے سے ایران کے تعمیری موقفوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہم ہرگز مشکل حالات میں ایرانی حکومت اور عوام کی حمایتوں کو نہیں بھولیں گے۔
انہوں نے دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کے فروغ پر آمادگی کا اظہار کرتے ہوئے اس حوالے سے ایران اور قطر کے درمیان طے پانے والے معاہدوں کے نفاذ پر زور دیا۔
انہوں نے علاقے میں بڑھتی ہوئی کشیدگی اور تنازعات میں اضافے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے کئی بار اپنے دوست ممالک اور امریکی حکام کو مسائل کے حل کیلئے مذاکرات کی تجویز دی ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ قطر، خطے میں عدم استحکام پھیلانے کے ہر کسی قسم کے اقدام کا سختی سے مخالف ہے۔
امیر قطر نے غزہ کی پٹی پر ناجائز صہیونی ریاست کی حالیہ جارحیت کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ان کا ملک مقبوضہ فلسطین میں قیام امن و استحکام کیلئے کسی بھی کوشش سے دریغ نہیں کرے گا۔
9467**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@