ایرانی صدر کا عراق کیساتھ باہمی تعلقات کی توسیع پر زور

تہران، 6 مئی، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے اپنے عراقی ہم منصب کیساتھ ایک ٹیلی فونک رابطے کے دوران، دونوں ملکوں کے درمیان طے پانے والے معاہدوں کے نفاذ کو ایران اور عراق کے درمیان تعلقات کے فروغ میں اہم قرار دے دیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ عراق کیساتھ باہمی تعلقات کی توسیع دونوں حکومتوں اور عوام کی خواست ہے۔
تفصیلات کے مطابق، ایرانی صدر مملکت ڈاکٹر "حسن روحانی" نے پیر کی رات اپنے عراقی ہم منصب "برہم صالح" کیساتھ ٹیلی فونک رابطہ کیا۔
اس موقع پر ایرانی صدر نے عراق میں امن، استحکام اور یکجہتی کے فروغ سے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے اس عزم کا اعادہ کیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران، دونوں ملکوں کے دوستانہ تعلقات کے فروغ سمیت ایران اور عراق کے درمیان طے پانے والے معاہدوں کے نفاذ کیلئے کسی بھی کوشش سے دریغ نہیں کرے گا۔
انہوں نے رمضان المبارک کی آمد پر اپنے عراقی حکومت اور عوام بالخصوص عراقی صدر کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور عراق، حساس علاقائی اور بین الاقوامی مسائل کے بارے ایک جیسا موقف اختیار کرلیتے ہیں۔
انہوں نے اس امید کا اظہار کردیا کہ مشترکہ تعاون سے علاقے کی ترقی اور دونوں ملکوں کے درمیان دوستانہ تعلقات میں مزید اضافہ ہوجائے گا۔
صدر روحانی نے غزہ کی پٹی پر ناجائز صہیونی ریاست کی غیر انسانی جارحیت پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ فلسطین میں صہیونی ریاست کی جارحیت میں دن بہ دن اضافہ ہوتا جار رہا ہے لہذا ضروری ہے کہ اسلامی ممالک اس حوالے سے مناسب اقدامات اٹھاتے ہوئے صہیونی ریاست کی مزید جارحیت کو روک دیں۔
ایرانی صدر نے علاقے میں عدم استحکام پھیلانے کے امریکی اقدامات اور ایرانی تیل کی برآمدات کی راہ میں رکاوٹیں حائل کرنے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ سارے خطی ممالک کو اس حساس صورتحال کو سمجھنے سمیت ایک دوسرے کیساتھ تعاون سے علاقے میں امریکہ کی غداری اور آمریت کو روک دینا چاہیے۔
انہوں نے مزید کہا کہ علاقے میں عدم استحکام پھیلانے کیلئے امریکی اقدامات نہ صرف خطے بلکہ امریکہ کو بھی نقصان پہنچیں گے۔
اس موقع پر عراقی صدر نے رمضان الکریم مہینے کی آمد پر ایرانی حکومت اور عوام کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور عراق کے درمیان تعلقات باہمی مفادات پر مبنی بنیادوں پر استوار ہیں لہذا ہم دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کے فروغ کیلئے پرعزم ہیں۔
عراقی صدر نے مزید کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان طے پانے والے معاہدوں کے نفاذ کے ذریعے باہمی تعلقات کی توسیع کیساتھ ایرانی اور عراقی عوام کی خدمت کر سکتے ہیں۔
انہوں نے خطے میں موجودہ صورتحال سے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ عراق علاقے میں ہر کسی قسم کی کشیدگی کا مخالف ہے اور ہرگز اپنے برادر اور ہمسایہ ملک کے عوام کو ہر کسی قسم کے نقصان پہنچنے کی برداشت نہیں کرے گا۔
انہوں نے کہا کہ فلسطین مسئلہ کے حوالے سے عراقی حکومت کا موقف ایرانی موقف جیسا ہے اور اسلامی ممالک کے سربراہوں کے ناطے سے ہمارا فرض ہے کہ فلسطینی عوام کی حمایت کیساتھ اس مقدس سرزمین پر ناجائز صہیونی ریاست کی جارجیت کو روک دیں۔
9467**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@