توانائی شعبے میں ایرانی سرگرمیاں، قانونی اصولوں کے مطابق ہیں: چین

بیجنگ،6 مئی، ارنا- چینی محکمہ خارجہ کے ترجمان نے ایران کی جانب سے جوہری معاہدے سے متعلق تمام کیے گئے وعدوں پر عمل درآمد کرنے کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ توانائی شعبے میں ایران اور دوسرے ملکوں کے درمیان تعاون، قانونی اصولوں کے مطابق ہیں۔

رپورٹ کی مطابق "کنگ شوان" نے پیر کے روز ایک پریس کانفرنس کے دوران مزید کہا کہ ان کا ملک، 2015ء میں ایران اور گروپ 5+1 کے درمیان طے پانے والے جوہری معاہدے پر قائم ہے اور اس بین الاقوامی معاہدے کے تحفظ کیلئے کوشاں بھی ہے۔
انہوں نے امریکہ کی جانب سے ایرانی تیل کے خریداروں کو ملنے والی استثنی کی عدم توسیع کی وجہ سے رونما ہونے والے معاشی دباؤ کے تناظرمیں کہا کہ چین جوہری معاہدے پر بدستور قائم رہے گا۔
انہوں نے کہا کہ ایران جوہری معاہدہ، اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اصولوں کے مطابق ایک کثیر الجہتی اور جامع معاہدہ ہے جو مشرق وسطی میں جوہری ہتھیاروں کی عدم پھیلاو کے حوالے سے بہت بڑی اہمیت رکھتا ہے۔
چینی وزارت خارجہ کے ترجمان نے ایران جوہری معاہدے پر موثر انداز میں عمل درآمد کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔
انہوں نے ایک بار پھر ایران جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی اور ایران کیخلاف امریکی دشمن پالیسی کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے ہاں، توانائی کے شعبے میں ایران اور دیگر ممالک کے درمیان تعاون، بالکل قانونی اصولوں کے تحت ہیں۔
9467**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@