پاک ایران سرحدی علاقے میں 1.4 ٹن منشیات پکڑلی گئیں

زاہدان، 4 مئی، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کے جنوب مشرقی صوبے اور پاکستان سے ملحقہ سرحدی علاقے «میرجاوہ» میں 1383 کلوگرام مختلف اقدام کی منشیات کو پکڑلیا گیا.

یہ بات ایران کے جنوب مشرقی صوبے سیستان بلوچستان کے سرحدی پولیس چیف کرنل «محمد ملاشاہی» نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے بتایا کہ سرحدی علاقے میرجاوہ میں منشیات اسمگلنگ کی روک تھام کے لئے انتہائی سخت اقدامات اٹھائے گئے ہیں اور اس مقصد کے لئے انسداد منشیات فورسز ہمہ وقت تیار ہیں.
پولیس کمانڈر کے مطابق، اسمگلروں کا خیال تھا کہ وہ زمینی حالات کا فائدہ اٹھا کر ملک میں منشیات لاسکتے ہیں جبکہ سیکورٹی فورسز نے انھیں چونکا دیا اور ایک کامیاب آپریشن کے دوران دو گاڑیوں کو روکا گیا جس سے مجموری طور پر 1.4 ٹن کے قریب مختلف قسم کی منشیات پکڑی گئیں.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران افغانستان سے یورپ تک منشیات اسمگلنگ کرنے کے راستے میں واقع ہونے کی وجہ سے اس لعنت کی روک تھام کی فرنٹ لائن پر ہے.
ایران، افغانستان کے ساتھ پڑوسی ہونے کی وجہ سے منشیات سمگلنگ کا نشانہ بنا ہوا ہے.
2001 میں امریکہ اور اس کے اتحادیوں نے دہشتگردی کے خلاف نام نہاد جنگ کے بہانے سے افغانستان پر جارحیت کی جس کی وجہ سے منشیات کی پیداوار میں درجنوں فیصد اضافہ ہوا ہے.
اب تک ہزاروں ایرانی اہلکار منشیات کے خلاف جنگ میں اپنی جانوں کا نذرانہ دے چکے ہیں.
9410*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@