ایران اور امریکہ کے درمیان فوجی جھڑپ کا کوئی امکان نہیں: ظریف

لندن، 3 مئی، ارنا – ایرانی وزیر خارجہ نے مستقبل میں ایران اور امریکہ کے درمیان فوجی جھڑپ کے امکانات کو مسترد کردیا.

محمد جواد ظریف نے برطانوی اخبار انڈیپینڈنٹ کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے مزید کہا کہ شاید خلیج فارس یا آبنائے ہرمز میں کچھ ایسے واقعات ہوں جس کی وجہ سے دونوں ملکوں کے درمیان فوجی جھڑپ ہوجائے.
انہوں نے کہا کہ جنوری 2016 میں امریکی بحریہ کی دو کشتیاں غیرقانونی طور پر ایرانی حدود میں داخل ہوئیں جنہیں ہم نے پکڑلیا تاہم اس وقت کے امریکی خارجہ جان کری کے ساتھ رابطہ چینل بحال رہنے کی وجہ سے صورتحال پر قابو پالیا گیا جس سے ممکنہ جھڑپ کو روکا گیا.
ظریف نے ایران اور امریکہ کے درمیان قیدیوں کے تبادلے سے متعلق کہا کہ انھیں اس حوالے سے اختیار حاصل ہے. امریکہ میں بقول ان کے پابندیوں کے قوانین کی خلاف ورزی کرنے پر بعض ایرانی شہری قید میں ہیں.
انہوں نے اس بات کی وضاحت کردی کہ ایران اور امریکہ کے درمیان قیدیوں کے تبادلے کے عمل میں ایرانی نژاد برطانوی شہر نازنین زاغری شامل نہیں جو سیکورٹی الزامات کی وجہ سے ایران میں قید ہیں.
274**
9393* ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@