ظریف کا توسیع پسندانہ یکطرفہ اقدامات کی روک تھام پر زور

تہران، 1مئی، ارنا- ایرانی وزیر خارجہ نے قطر کے دورے پر ایشیائی تعاون ڈائیلاگ کے انعقاد کی ضرورت سمیت توسیع پسندانہ یکطرفہ اقدامات کی روک تھام کیلئے تمام صلاحیتوں کو بروئے کار لانے پر زور دیا ہے۔

"محمد جواد ظریف" نے ایک ٹوئٹر پیغام کے ذریعے مزید کہا کہ انہوں نے دارالحکومت دوحہ میں ایشیائی تعاون ڈائیلاگ کے موقع امیر قطر اور قطری وزیر خارجہ سمیت دوسرے غیر ملکی وزرائے خارجہ کیساتھ مثبت اور تعمیری مذاکرات کیے ہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ ان مذاکرات میں علاقائی تعاون ڈائیلاگ کی نشست کے انعقاد کی ضروت سمیت توسیع پسندانہ یکطرفہ اقدامات کی روک تھام کیلئے تمام صلاحیتوں کو بروئے کار لانے پر زور دیا گیا ہے۔
واضح رہے کہ ایرانی وزیر خارجہ نے قطر کے دورے پر قطر، ترکی، سری لنکا، ملائیشیا، انڈونیشیا اور قازقستان کے وزرائے خارجہ سے بھی الگ الگ ملاقاتیں کیں۔
ایرانی وزیر خارجہ کل رات امیر قطر کی عشائیہ تقریب میں بھی شرکت کی۔
اس کے علاوہ انہوں نے الجزیرہ نیوز چینل سے مختلف موضوعات بشمول ایران اور امریکہ کے درمیان تعلقات، ایرانی تیل کی برآمدات، خلیج فارس اور آبنائے ہرمز، ایران مخالف امریکی معاشی دہشتگردی، ٹیم بی کی سازشوں، ایران اور سعودی عرب کے درمیان تعلقات، یمنی بحران اور انسداد دہشتگردی کے حوالے سے انٹرویو کی ہے جس کے بارے میں مزید تفصیلات جلدی سے نشر ہوں گے۔
واضح رہے کہ ایشیائی تعاون ڈائیلاگ 2002ء کو تھائی لینڈ میں 18 ایشیائی ممالک کی شرکت سے قیام عمل میں آیا اور اب 32 ممالک اس تنظیم کے رکن ہیں۔
9467**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@