برطانیہ اور آسٹریا کا ایران سے متعلق  FATF کے مالیاتی اقدام کا خیرمقدم

لندن، 23 فروری، ارنا – اسلامی جمہوریہ ایران میں تعینات برطانوی اور آسٹرین سفیروں ںے فائننشل ایکشن ٹاسک فورس (FATF) کی جانب سے جون تک ایران کے خلاف تنبیہی اقدامات کی معطلی کی تجدید کا خیر مقدم کیا.

آسٹرین اور برطانوی سفیر "اسٹفن شولتز اور راب مکر" اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹز میں اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف تنبیہی اقدامات کی معطلی کی مدت کو بڑھانے کا خیرمقدم کیا ہے.
برطانیہ میں تعینات ایرانی سفیر "حمید بعیدی نژاد" نے گزشتہ روز اپنے ٹوئٹر پیج میں لکھا کہ ایف اے ٹی اف کے حالیہ اجلاس میں دہشتگردی کے حوالے سے مالی معاونت کی روک تھام اور انسداد منی لانڈرنگ پر ایران کی کوششوں کی حمایت کے علاوہ ایران کو قومی قوانین کی تکمیل کے لئے جون 2019 تک کی مہلت دی گئی.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے 2017 کے دوران دہشتگردی کے حوالے مالی معاونت کی روک تھام اور انسداد منی لانڈرنگ کے حوالے سے نئی قانون سازی کے لئے تجاویز پیش کیں.
عالمی انسداد منی لانڈرنگ گروپ (FATF) ایک بین الحکومتی ادارہ ہے جس کا قیام 1989 میں عمل میں آیا تھا. اس ادارے کا بنیادی مقصد یہ ہے کہ بین الاقوامی مالیاتی نظام کو دہشت گردی، کالے دھن کو سفید کرنے اور اس قسم کے دوسرے خطرات سے محفوظ رکھا جائے اور اس مقصد کے لیے قانونی، انضباطی اور عملی اقدامات کیے جائیں.

واضح رہے کہ امریکہ سمیت بعض ممالک یہ کوشش کررہے تھے کہ ایف اے ٹی ایف ایران کے خلاف سخت حفاظتی اقدامات کرے تاہم ایف اے ٹی ایف نے ایران کے خلاف حفاظتی اقدامات کی معطلی میں چار مہینوں کی توثیق کردی.
274*9393**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@