ٹرمپ مذاکرات چاہتا ہے تو پہلے اعتماد بحال کرے: ایرانی ترجمان

تہران، 21 فروری، ارنا - ایرانی دفترخارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ یہ دعویٰ کرتے ہیں کہ وہ ایران کے ساتھ مذاکرات میں دلچسپی رکھتے ہیں مگر سب سے پہلے امریکہ کو ماضی میں خراب ہونے والی اعتماد کی فضا کو بحال کرنا ہوگا.

یہ بات ''بہرام قاسمی'' نے ایران کے دورے پر آئے ہوئے چینی اخبار گلوبل ٹائمز کے چیف ایڈیٹر اور دیگر عہدیداروں کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ مذاکرات کے لئے سنجیدہ نہیں اور نہ ہی وہ موثر مذاکرات چاہتا ہے لہذا اگر وہ یہ دعویٰ کرتا ہے کہ بات چیت میں دلچسپی رکھتا ہے تو اسے پہلے دوطرفہ اعتماد کو بحال کرنا ہوگا.
ترجمان نے بتایا کہ اسلامی جمہوریہ ایران ایک آزاد اور خودمختار ریاست ہے اور انھی اصولوں کے تحت اپنے قومی مفادات کے لئے فیصلہ کرتا ہے اور ہماری پالیسی ہرگز عالمی قوتوں کے فیصلوں کے تابع نہیں.
انہوں نے ایران امریکہ تعلقات میں کشیدگی سے متعلق کہا کہ ایران نے کشیدگی کے لئے ہرگز پہل نہیں کی بلکہ اس کی وجہ امریکہ کی ظالمانہ اور یکطرفہ پابندیاں ہیں اور دوسری وجہ ایران جوہری معاہدے سے امریکہ کی غیرقانونی علیحدگی ہے.
بہرام قاسمی نے مزید کہا کہ آج دنیا امریکہ کی انفرادیت پر مبنی پالیسی سے تنگ آچکی ہے اسی وجہ سے آج ہم امریکہ سے متعلق چین، روس اور یورپ کی جانب سے مزاحمت کو دیکھ رہے ہیں.
انہوں نے کہا کہ امریکہ نے خطے میں جارحانہ پالیسی اپنائی ہے، اس نے عراق، شام، یمن اور افغانستان کو تباہ کیا اور مشرق وسطی میں صہیونیوں کے تحفظ کے لئے دہشتگردوں کا سہارا لے رہا ہے. امریکہ طالبان، القاعدہ اور داعش جیسی دہشتگرد تنظیموں کی سرپرستی کررہا ہے اسی لئے ایران، امریکہ کے سامنے مزاحمت کرتا ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@