دنیا کیساتھ تعاون کیلئے تیار ہیں: ایرانی صدر

تہران، 20 فروری، ارنا - صدر مملکت ایران نے کہا ہے کہ ایران، عالمی برادری کے ساتھ تعاون اور تعمیری تعلقات کے لئے تیار ہے تاہم جو ممالک ہمارے ساتھ کام کررہے ہیں وہ ایران سے غیرذمہ دارانہ عمل کروانے یا غیرتعمیری مطالبات منوانے کی توقع نہ رکھیں.

یہ بات ڈاکٹر "حسن روحانی" نے بدھ کے روز تہران میں کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران، آج بھی اپنے موقف اور ملک کے قومی مفادات سے متعلق اپنے اصولوں پر قائم ہے تاہم ایران، بعض ممالک کے غیر تعمیری مطالبات کو تسلیم نہیں کرے گا.
ڈاکٹر روحانی نے کہا ایران، یورپی یونین کے ساتھ قریبی تعلقات جاری رکھنے کا خواہاں ہے اور تمام فریقین کو بھی چاہئے کہ اپنی ذمہ داریوں پر من و عن عمل کریں.
انہوں نے کہا کہ ایران کے خلاف امریکہ منفی اقدامات اور ایران سے تعاون نہ کرنے پر غیرملکی کمپنیوں پر دباو کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کا یہ اقدام سو فی صد معاشی دہشتگردی ہے.
ایرانی صدر نے گزشتہ ہونے والی وارسا کانفرنس کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس اجلاس کے میزبان ممالک نے شروع میں واضح طور پر اعلان کیا کہ اجلاس کا ایجنڈہ ایران مخالف ہے تاہم اکثر ملکوں کی مخالفت کی وجہ سے وارسا کانفرنس کی میزبانی کرنے والے اس اجلاس کے عنوان کو بدل کرنے پر مجبور ہوئے.
انہوں نے شام سے متعلق روسی شہر سوچی میں حالیہ سہ فریقی اجلاس کا ذکر کرتے ہوئے مزید کہا کہ سوچی میں ایران، روس اور ترکی نے شام میں امریکی سرگرمیوں اور غیر قانونی موجودگی کی پر تنقید کے علاوہ علاوہ شام میں امریکی اقدامات کو صہیونی مفاد میں قرار دے دیا.
روحانی نے کہا کہ وارسا کانفرنس کے برعکس سوچی کا اجلاس انتہائی تعمیری رہا جس سے خطے میں امریکی ناکامی ظاہر ہوتی ہے.
9410*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@