ایرانی تیل، برآمدات کی شرح جنوری میں توقع سے زیادہ رہی

تہران، 20 فروری، ارنا – رائٹرز نیوز ایجنسی نے کہا ہے کہ گزشتہ ماہ جنوری میں ایرانی تیل کی برآمدات اور خریداری کی شرح توقع سے زیادہ رہی ہے.

رائٹرز نے اپنی رپورٹ میں مزید کہا ہے کہ ایرانی تیل کی خریداری پر امریکہ سے استثنی لینے والے ممالک کی خریداری کی وجہ سے اس کی برآمدات میں مزید اضافہ ہوگیا ہے.
رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ ایران نے جنوری کے دوران توقع سے زیادہ ملکی تیل کی برآمدات کیں اور رواں مہینے میں ایرانی تیل کی مارکیٹ میں استحکام برقرار ہے.
ایران نے فروری میں روزانہ ساڑھے 12 لاکھ بیرل تیل برآمد کیا جبکہ جنوری میں 11 لاکھ سے 13 لاکھ بیرل کے درمیان تیل برآمد ہوا.
رائٹرز کے مطابق، ایرانی تیل برآمدات میں اضافے کا اثر تیل کی قیمت پر پڑا ہے اسی لیے اوپیک تنظیم نے رواں سال تیل کی فراہمی کو کم کرنے کا فیصلہ کیا ہے تاہم ایران نے اوپیک تنظیم سے امریکی پابندیوں کی وجہ سے استثنی حاصل کر رکھی ہے.
یہ کہا جارہا ہے کہ اگر ایرانی تیل برآمدات میں اضافے کا سلسلہ جاری رہا تو امریکہ اپنی تیل برآمدات کم کرنے پر مجبور ہوگا جس کے بعد تیل کی قیمت میں اضافے کا امکان بھی ہے جبکہ امریکہ، وینزویلا کی تیل برآمدات کو روکنا چاہتا ہے.
یاد رہے کہ نومبر کو ایران کے خلاف امریکہ کی نئی تیل پابندیوں کے شروع سے ایرانی تیل کی برآمدات میں کے حجم میں نمایان کمی نہیں آئی ہے اور تیل کی حالیہ نقل و حمل سے یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ ایرانی تیل برآمدات کی شرح توقع سے بھی زیادہ رہی ہے.
9410*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@