کئی انٹیلی جینس ایجنسیاں ایران کیخلاف کام کررہی ہیں: ایرانی وزیر

تہران، 19 فروری، ارنا - ایرانی وزیر انٹیلی جنس نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران کو کئی انٹیلی جنس سروسز کا سامنا ہے جو ایران کی سلامتی کو خطرے میں ڈالنے کیلئے ایک دوسرے کیساتھ متحد ہوگئے ہیں۔

یہ بات ایرانی "محمود علوی" نے ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں اس بات پر یقین رکھنا ہے کہ ایران کو صرف ایک چھوٹے سے گروپ کا سامنا نہیں بلکہ کئی انٹیلی جنس سروسز کا سامنا ہے جو ایران کی سلامتی کو خطرے میں ڈالنے کیلئے ایک دوسرے کیساتھ متحد ہوگئے ہیں۔
ایرانی وزیر انٹیلی جنس نے کہا کہ کسی بھی صورتحال میں، یہ ممکن ہے کہ اسلامی انقلاب کے مخالف گروپ، اسلامی جمہوریہ ایران کی سلامتی کو چیلنج کا سامنے کرنے کی کوشش کریں لیکن ملک کے حساس اداروں کے اہلکار، ان کے ہر اقدام سے مطلع ہو کر ان کی کوششوں کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے تاہم شاید ان کی کوششوں میں سے ایک، سرانجام تک پہنچنے میں کامیاب رہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ اس طرح کے واقعات دنیا کے کسی بھی کونے میں وقوع پذیر ہوتے ہیں لیکن ایران میں ان جیسے واقعات کے بعد ملک کے سارے سیکورٹی اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار ایک دوسرے کیساتھ ہم آہنگی سے ان واقعات میں ملوث عناصر کی شناخت اور گرفتاری کیلئے فوری اقدامات کریں گے۔
ایرانی وزیر انٹیلی جنس نے ملک کے جنوب مشرقی صوبے سیستان و بلوچستان کے حالیہ دہشتگردانہ حملے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ حساس اداروں نے حملے میں استعمال ہونے والی گاڑی کے ملبے کا جائزہ لے کر گاڑی سے منسلک افراد کو گرفتار کرکے ان کے ذریعے دہشت گرد گروہ کیساتھ منسلک عناصر کی شناخت کی۔
*9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@