قطر نے پابندیوں کے دوران ایرانی حمایت کا شکریہ ادا کیا

تہران، 17 فروری، ارنا- قطر کے نائب وزیر اعظم اور وزیر خارجہ نے دوحہ اور تہران کے درمیان تعلقات کے فروغ کی حمایت کرتے ہوئے پابندیوں کے دوران، ایرانی امداد کا شکریہ ادا کیا۔

یہ بات "محمد بن عبدالرحمن آل ثانی" نے میونخ کی سکیورٹی کانفرس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ عرب ممالک کی جانب سے قطر پر لگائی گئی پابندیوں کے بعد ہمیں اپنی پروازوں کیلئے فضائی حدود اور تجارتی راستوں کی ضروت تھی جو ایران نے اپنی فضائی حدود کو قطر کیلئے کھول دیا جس پر ہم اسلامی جمہوریہ ایران کے شکرگزار ہیں۔
قطر کے وزیر خارجہ نے کہا کہ ایران ہماری پڑوسی ہے اور جغرافیائی پوزیشن اور مشترکہ معدنی وسائل دونوں ممالک کو ایک دوسرے کیساتھ جوڑا ہے۔
انہوں نے کہا کہ اگر ایران اور قطر کے درمیان اختلاف رائے ہے تو اس کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنا چاہیے۔
انہوں نے ایران اور عربستان کے درمیان کشیدگی پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اس امید کا اظہار کردیا کہ ریاض- تہران تعلقات جلدی سے بحال ہوجائیں گے۔
قطری وزیر خارجہ نے کہا کہ ایران عربستان تعلقات کی بحالی قطر سمیت خطے کے مفادات میں بھی ہوگی۔
محمد بن عبدالرحمن آل ثانی نے گزشتہ سال میں اٹلی کے دارلحکومت روم میں منعقدہ بحیرہ روم کے ڈائیلاگ میں ایران مخالف امریکی پابندیوں کے رد عمل میں کہا کہ پابندیوں کے باوجود ایران کےساتھ اپنے تعلقات کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔
انہوں نے گیس کے شعبے میں ایران اور قطر کے درمیان تعلقات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ قطر کے خلاف لگائی ہوئی پابندیوں کے بعد اسلامی جمہوریہ ایران نے پابندیوں کو مسترد کرتے ہوئے اپنی فضائی حدود کو قطر کے لئے کھول دیا۔
یاد رہے کہ سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، بحرین اور مصر نے جون 2017 میں قطر کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کردئے اور انہوں نے قطر پر ایران کے ساتھ قریبی تعلقات رکھنے کو جواز بنا کر اس پر پابندیاں لگائیں اور اسے معاشی محاصرے کا شکار کیا.
*9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@