پاکستان انسداد دہشتگردی کیلئے سنجیدگی اپنائے: اعلی ایرانی عہدیدار

تہران، 17 فروری، ارنا- ایرانی پارلیمنٹ کی قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی کمیٹی کے ترجمان نے کہا ہے کہ پاکستان سے توقع کی جار ہی ہے کہ وہ مضبوط سیاسی ارادے کیساتھ اپنی سرزمین کو دہشتگردوں کی جانب سے ایرانی سرزمین کے خلاف استعمال کرنے کی اجازت نہ دے.

یہ بات "علی نجفی خوشرودی" نے اتوار کے روز صحافیوں کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے مزید کہا کہ پارلمینٹ کی قومی سلامتی کمیٹی نے زاہدان دہشتگردانہ حملے پر ایک غیر معمولی نشست کا انعقاد کیا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ ہونے والی نشست میں قومی سلامتی کمیٹی کے ارکین نے زاہدان دہشتگردانہ حملے کی مذمت کرتے ہوئے اس حملے کے جزئیات کا جائزہ لیا ہے۔
ایرانی پارلیمنٹ کی قومی سلامتی کمیٹی کے ترجمان نے کہا ہے با وجود اس کے ملک کے حساس اداروں کے اہلکاروں نے حالیہ مہینوں میں ایران کیخلاف بہت کئی دہشتگردانہ اقدامات کو روک دیا ہے لیکن سرحدوں میں کمیوں اور خامیوں کی وجہ سے زاہدان، دہشتگردی حملے کا شکار ہوا۔
انہوں نے مزید کہا کہ اس نشست کا ایک موضوع، دہشت گردوں کی جانب سے پاکستان کی سرزمین کو ایران کے خلاف استعمال کرنا تھا ۔
انہوں نے مزید کہا کہ ہم مشترکہ سرحدوں کی کنٹرول کے حوالے سے پاکستانی حکومت کے مسائل اور مشکلات کو سمجھتےہیں لیکن پاکستان سے توقع کی جار رہی ہے کہ وہ مضبوط سیاسی ارادے کیساتھ اپنی سرزمین کو دہشتگردوں کی جانب سے ایرانی سرزمین کے خلاف استعمال کرنے کی اجازت نہ دے-
خوشرودی نے کہا کہ اس نشست میں سرحدوں کی سلامتی کو اور مضبوط بنانے کے علاوہ ملک کے سیکورٹی اداروں کے درمیان ہم آہنگی کی ضرورت پر زور دیا گیا ہے۔
تفصیلات کے مطابق، بدھ کے روز ایک خودکش بمبار نے ایران کے جنوب مشرقی صوبے سیستان و بلوچستان میں زاہدان شہر سے خاش جانے والی پاسداران اسلامی انقلاب کے اہلکاروں کی بس کو نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں 27 اہلکار شہید اور 13 زخمی ہوگئے۔
*9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@