ایرانی عوام اپنے شہداء کے خون کا بدلہ لیں گے: صدر روحانی

تہران، 17 فروری، ارنا –ایرانی صدر مملکت نے پاکستان سے ملحقہ سرحدی صوبے سیستان و بلوچستان میں دہشتگردوں کے حالیہ حملے میں سرحدی اہلکاروں کی شہادت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی عوام قطعی طور پر اپنے شہداء کے خون کا بدلہ لیں گے.

ان خیالات کا اظہار 'حسن روحانی نے آج بروز اتوار ایران کے جنوبی صوبے ہرمزگان میں اس صوبے کے عوام کے عظیم اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے مزید بتایا ہم خطے میں دوسرے ممالک کی جانب سے حمایت ہونے والے دہشتگردی گروپوں کو دہشتگردانہ اقدامات انجام دینے کی اجازت نہیں دیں گے.
انہوں نے مزید کہا کہ دہشتگرد، کسی انسانی اقدار یا اصولوں کے پابند نہیں ہیں.
روحانی نے کہا کہ ایران خلیج فارس کے خطے میں دوستانہ اور برادرانہ تعلقات چاہتا ہے، ہم ہرگز خطے میں کسی جنگ کے لئے پہل نہیں کریں گے.
ایرانی صدر نے کہا کہ ہم نے اپنے ہمسایوں کو بتایا ہے کہ ایران اس جیسے حملوں کو پسپا کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے اور دشمن کو شکست بھی دیں گے.
انہوں نے کہا کہ اغیار کے پالے ہوئے عناصر جان لیں کہ وہ خطے میں سلامتی کے ٹھیکدار نہیں بن سکتے، جس نے ایران پر جارحیت کی اس نے کویت کو بھی نہ بخشا اور اگر اسے لگام نہ دی جاتی تو وہ دوسروں پر بھی حملہ آور ہوتا.
ڈاکٹر روحانی نے بتایا کہ خطے کی سلامتی یہاں کی مسلم قوموں کے ہاتھ میں ہے، لہذا ہمیں علاقائی سلامتی کے لئے متحد رہنا ہوگا اور اس مقصد کے لئے خطے میں دوستانہ اور برادرانہ تعلقات ناگزیر ہیں.
خطے میں ان میں سے بعض اپنی سلامتی کے لئے امریکہ اور ناجائز صہیونی ریاست کے در پر بیٹھے ہوئے ہیں اور ان کا خیال ہے کہ ایران جیسا طاقتور ملک خطے پر غلبہ پانا چاہتا ہے جبکہ ایران، تمام علاقائی ممالک کے ساتھ برادرانہ تعلقات چاہتا ہے.
روحانی نے کہا کہ بعض ممالک کے ساتھ ہمارے اچھے تعلقات ہیں تاہم اگر کسی نے دشمنی کی تو اسے خود نقصان ہوگا.
انہوں نے علاقائی ممالک کو تعاون اور برادرانہ تعلقات کی دعوت دے دی، بدقسمتی سے ہمارے بعض ہمسایہ ممالک نے غلط راستہ اپنایا ہے جبکہ ایران تمام خطی ممالک کے ساتھ برادرانہ تعلقات کا خواہاں ہے.
روحانی نے کہا کہ عالمی سامراج قوتوں کا ایک اصل مقصد ایران میں قومی اور لسانی اختلافات کو ہوا دینا ہے جس میں وہ بعض اوقات کامیاب اور بعض میں ناکام ہوئیں.
انہوں نے کہا خطی سلامتی کے لئے امریکہ کی کوئی ضرورت نہیں بلکہ خطی ممالک کی طاقتور افواج اس مقصد کے لئے کافی ہیں.
یاد رہے کہ دہشتگردوں نے گزشتہ بدھ کی رات زاہدان،خاش روڈ پر پاسداران انقلاب کے اہلکاروں کی بس کو کار بم دھماکے کے ذریعے نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں 27 اہلکار شہید اور 13 زخمی ہوئے.
بدنام زمانہ دہشتگرد تنظیم جیش العدل نے اس سفاکانہ کاروائی کی ذمہ داری قبول کی ہے.
9410*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@