ایران سے جنگ، خودکشی کے مترادف ہوگی: ظریف

تہران، 16 فروری، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ نے امریکہ اور اس کے اتحادی ممالک کو خبردار کیا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف کسی بھی طرح کی جنگ کا آغاز، خودکشی کے مترادف ہوگا.

یہ بات ''محمد جواد ظریف'' نے دورہ جرمنی میں میونخ سکیورٹی کانفرنس کے موقع پر امریکی نیوز چینل ''این بی سی'' کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہی.
انہوں نے مزید کہا کہ جنہوں نے 2003 میں عراق پر جنگ مسلط کی تھی اب وہ ایران کے خلاف نئی جنگ کا آغاز کرنا چاہتے ہیں جبکہ ایسا اقدام خودکشی کے مترادف ہوگا.
ظریف نے ایران جوہری معاہدے پر از سرنو مذاکرات کے امکان کو سراسر مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمارا مطلب یہ نہیں کہ ٹرمپ انتظامیہ جنگ چاہتی ہے تاہم موجودہ امریکی حکومت میں شامل بعض افراد ایران کے خلاف جنگ کے خواہاں ہیں.
ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ایران حالیہ دنوں دو سیٹلائٹ خلاء میں بھیجے مگر یہ عمل کامیابی سے ہم کنار نہ ہوسکا لیکن اس میں امریکہ کی جانب سے تخریب کاری کا امکان ہے.
انہوں نے وارسا میں منعقدہ مشرق وسطی کانفرنس پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک بڑی شکست تھی اور اس بات کا ثبوت ہے کہ امریکہ، ایران سے متعلق تنہائی کا شکار ہے.
ظریف نے کہا کہ ایران نے عالمی طاقتوں کے ساتھ طویل مذاکرات کرکے جوہری معاہدے کرنے پر اتفاق کیا جبکہ امریکہ یکطرفہ فیصلہ کرتے ہوئے غیرقانونی طور پر اس معاہدے سے نکل گیا.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران جوہری معاہدہ امریکہ اور شمالی کوریا کے درمیان دو صفحوں پر مشتمل دستاویز نہیں بلکہ جوہری معاہدہ 150 صفحوں پر مشتمل عالمی دستاویز ہے.
ایرانی وزیر خارجہ نے یورپی ممالک کی جانب سے ان کی سرزمین میں بعض افراد کے قتل سے متعلق الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ غلط نشاندہی کے علاوہ کچھ نہیں.
انہوں نے شام سے امریکی فوج کے انخلاء کو بشار الاسد کے حامی ممالک کے لئے فتح قرار دیتے ہوئے مزید کہا کہ شام میں تشدد میں کافی حد تک کمی آئی ہے اور یہ ایک بڑی کامیابی ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@