وارسا کانفرنس کے نصیب میں شکست کے سوا کچھ نہیں: ایرانی اسپیکر

بیجنگ، 14 فروری، ارنا - ایرانی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے کہا ہے کہ پولینڈ کے دارالحکومت وارسا میں منعقدہ کانفرنس سے نہ کچھ نکلے گا اور نہ اس سے مسئلہ فلسطین کے حل کیلئے مدد ملے گی.

یہ بات ''علی لاریجانی'' نے دورہ جاپان کے موقع پر 'ٹوکیو' میں مختلف ذرائع ابلاغ اور اخبارات کے نمائندوں کی موجودگی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے جاپانی صحافیوں کو بتایا کہ وارسا کانفرنس میں کوئی ایسی معروف اور بااثر شخصیات شریک نہیں اور ایسی نشستوں سے مسئلہ فلسطین کا حل ممکن نہیں.
لاریجانی نے کہا کہ وارسا کانفرنس شروع ہونے سے پہلے ہی شکست کھاچکی ہے کیونکہ اہم ملکوں نے اس میں شرکت سے انکار کردیا تھا.
انہوں نے مزید کہا کہ وارسا کانفرنس کا عنوان امن برائے مشرق وسطی رکھا گیا ہے جبکہ اصل موضوع فلسطین ہے اور اس میں فلسطین اتھارٹی کے حکام شریک ہی نہیں اور اس کے بجائے ڈونلڈ ٹرمپ کے داماد کوشنر شریک ہیں.
علی لاریجانی نے عرب اسرائیل تعلقات کی بحالی پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ صہیونیوں کے ساتھ تعلقات بڑھانے سے عرب ملکوں کو بڑا نقصان ہوگا کیونکہ عرب اقوام کے درمیان صہیونیوں کے خلاف بڑی نفرت پائی جاتی ہے اور یہ منصوبہ بھی القدس کو صہیونی دارالحکومت بنانے کی طرح شکست سے دوچار ہوگا.
انہوں نے امریکی پابندیوں سے متعلق کہا کہ ایران پر یکطرفہ پابندیاں زیادہ عرصہ نہیں چل سکتیں اور ہماری معیشت اپنا راستہ خود نکالے گی.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@