فرانس اور برطانیہ کا ایران جوہری معاہدے کے تحفظ پر زور

تہران،13 فروری، ارنا- فرانس کے وزیر خارجہ اور فرانسیسی وزیر برائے یورپی امور نے برطانوی وزیر خارجہ کیساتھ ملاقات میں ایران جوہری معاہدے کے تحفظ پر زور دیا۔

رپورٹ کے مطابق، فرانس کے وزیر خارجہ "جان ایف لوڈریان" اور فرانسیسی وزیر برائے یورپی امور"ناتالی لوآزو" نے پیرس میں برطانوی وزیر خارجہ "جیرمی ہنٹ" کیساتھ الگ الگ ملاقاتیں کیں۔
ہونے والی ملاقاتوں میں یورپی یونین کے اہم مسائل بشمول بریگزٹ کے بارے میں تبادلہ خیال کیا گیا۔
اس کے علاوہ فرانسیسی وزرا نے بین الاقوامی اصولوں کے تحت اور عالمی سلامتی کے تحقظ کے مقصد سے ایران جوہری معاہدے کے تحفظ کی ضرورت پر زور دیا۔
ان ملاقاتوں میں فریقین نے شامی مسئلہ اور شام کے شمال مشرقی علاقوں کے بارے میں بھی بات چیت کی۔
فرانس اور برطانیہ نے اس وقت پر ایران جوہری معاہدے کے تحفظ زور دیا ہے جب بعض سیاسی ماہرین اور بین الاقوامی نگرانوں کا عقیدہ ہے کہ فرانس، برطانیہ اور جرمنی نے ایران کیلئے انسٹیکس میکنزم کے نفاذ کے ساتھ جوہری معاہدے کےتحفظ کے حوالے سے پہلا قدم اٹھایا ہے۔
یاد رہے کہ گزشتہ سال مئی میں ایران جوہری معاہدے سے امریکہ کی غیرقانونی علیحدگی کے بعد، یورپی یونین نے اس کے خلاف مؤقف اپنایا اور اس نے ایران کے ساتھ تجارت کو جاری رکھنے کے لئے موثر طریقہ اپنانے کا اعلان کر رکھا-
تفصیلات کے مطابق، رومانیہ میں یورپی یونین کے حالیہ وزارتی اجلاس کے بعد جرمنی، برطانیہ اور فرانس کے وزرائے خارجہ نے ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں ایران کے لئے مخصوص مالیاتی نظام کے اجرا کا باضابطہ طور پر اعلان کردیا.
رپورٹ کے مطابق، یورپ کے مخصوص مالیاتی چینل کا مرکزی دفتر پیرس میں ہوگا جسے INSTEX کا نام دیا گیا ہے اور یہ ''تجارتی تبادلے کے سازوسامان'' کا مخفف ہے.
تینوں یورپی ممالک انسٹیکس میکنزم کے حصہ دار ہوں گے اور نامور جرمن بینکر اس کی قیادت کریں گے.
9467*
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@