ایران کے بغیر مشرق وسطی میں امن کا قیام ممکن نہیں: پولینڈ

تہران، 9 فروری، ارنا - پولینڈ نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے کردار کو نظرانداز کرکے مشرق وسطی کے مسائل کا حل ناممکن ہے.

یہ بات نائب پولیش وزیر خارجہ ''بارٹوز سیچوکی'' برائے سیکورٹی اور امریکی امور نے ریڈیو آر ایم ایف سے گفتگو کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے کہا کہ 13 اور 14 فروری کو پولینڈ میں مشرق وسطی کی صورتحال پر کانفرنس کا انعقاد کیا جائے گا جس میں موجودہ بحرانوں سے متعلق مختلف آراء پیش کی جائیں گی.
اعلی پولیش سفارتکار کا کہنا تھا کہ یقینا اس کانفرنس کا مقصد مشرق وسطی کے بحرانوں کے حل تک پہنچنا ہے اور اس کو ایسا ترتیب دیا گیا ہے کہ ایران کو بھی تمام مسائل کے حل کا ایک اہم حصہ قرار دیا جائے گا کیونکہ ایران کے بغیر مسائل کو حل نہیں کیا جاسکتا.
بارٹوز سیچوکی نے وارسا کانفرنس میں ایران کو مدعو نہ کئے جانے پر کہا کہ پولینڈ اور امریکہ اس کانفرنس کی مشترکہ میزبانی کررہے ہیں اور جب ایران اور امریکہ کے درمیان تعلقات قائم نہیں تو ایران کو دعوت نہیں دی جاسکتی تھی.
یاد رہے کہ امریکہ اور پولینڈ کے وزرائے خارجہ آئندہ کانفرنس کی مشترکی میزبانی کریں گے جبکہ کہا جارہا ہے کہ اس میں بعض عرب ممالک کی قیادت بالخصوص سعودی عرب، ناجائز صہیونی ریاست اور ایران مخالف منفاقین کی دہشتگرد تنظیم بھی شریک ہوں گے.
جبکہ دوسری جانب مختلف یورپی ممالک اور مشرق وسطی کی ریاستوں نے اس کانفرنس میں شرکت پر کوئی دلچسپی نہیں لی. روس اور یورپی یونین کی چیف خارجہ پالیسی نے بھی اس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@