ایران کا شام کیساتھ اقتصادی تعاون کے فروغ پر زور

تہران، 5 فروری، ارنا- ایرانی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے شامی وزیر خارجہ کیساتھ ملاقات میں دونوں ممالک کے درمیان اقتصادی تعاون کے فروغ پر زور دیا۔

"علی لاریجانی" نے شام کے نائب وزیر اعظم اور وزیر خارجہ "ولید المعلم" کیساتھ ملاقات میں دونوں ممالک کے درمیان بڑھتے ہوئے تعلقات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران اور شام کے درمیان تعلقات کا سلسلہ جاری رہے گا۔
انہوں نے دہشت گردی کے خلاف کیے گئے اقدامات کا ذکر کرتے ہوئے شامی مسائل کے حل اور انسداد دہشت گردی کے خلاف اہم پیشرفت پر خوشی کا اظہار کیا۔
انہوں نے کہا کہ شامی قوم کی مزاحمت دشمنوں کی سازشوں کے خلاف نتیجہ خیز تھی۔
ایرانی اسپیکر نے دونوں ممالک کے درمیان اقتصادی تعلقات کے فروغ پر زور دیتے ہوئے کہا کہ رواں سال میں دونوں ممالک کی چھوٹی اور درمیانی کمپنیوں کے درمیان تجارتی تعلقات انتہائی اہم اور ضروری ہے۔
اس موقع پر شامی وزیر خارجہ نے ایران میں اسلامی انقلاب کی 40 ویں سالگرہ کے موقع پر ایرانی حکومت اور قوم کو مبارکبادر پیش کرتے ہوئے کہا کہ اس عظیم اسلامی انقلاب نے ایران کی اندرونی سطح اور اسی طرح خطے بھر میں بہت گہرے اثرات مرتب کئے ہیں-

انہوں نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ایران اور شام کے تعمیری تعاون پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ اس کامیابی کی خاطر امریکہ اور ناجائز صہیونی ریاست کا غضب اور بڑھ کر شام میں مسلسل جارحیت سے اپنی سازشوں کو عملی جامہ پہنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔
شامی وزیر خارجہ نے ایران مخالف امریکی پابندیوں کی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ جیسا کہ شام کے خلاف امریکی سازشوں نے شکست کا سامنا کیا ویسا بھی ایران کے خلاف ان کی سازشوں کو بھی شکست کا سامنا ہوگا۔
انہوں نے مزید کہا کہ ایران مخالف امریکی پابندیاں اس بات کی عکاسی کر رہی ہیں کہ امریکی حکومت ایرانی قوم کی صلاحیتوں اور ان کے مضبوط ارادے سے نا واقف ہے۔
انہوں نے شام سے امریکی فوجیوں کی واپسی کے حوالے سے امریکہ کے دوہرے معیار کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ واشنگٹن نے نہ صرف اپنی فوجیوں کو شام سے واپس نہیں بھیجا ہے بلکہ فوجیوں کی واپسی کی نگرانی کو بہانہ بناکر ان کی تعداد میں مزید اضافہ بھی کیا۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@