دہشتگردی کیخلاف جنگ میں ایران اور شام کا تعاون جاری رہے گا

تہران، 5 فروری، ارنا- اعلی ایرانی سیکورٹی عہدیدار نے کہا ہے کہ علاقائی اور بین الاقوامی امن و سلامتی کی فراہمی میں دہشت گردی کیخلاف جنگ میں ایران اور شام کے تعاون، ناقابل انکار ہے اور یہ تعاون شامی سیکورٹی بحران کے اختتام تک جاری رہے گا۔

یہ بات ایران کی اعلی قومی سلامتی کونسل کے سیکریٹری ایڈمیرل "علی شمخانی" نے شامی وزیر خارجہ " ولید المعلم" کے ساتھ ایک ملاقات میں کہی۔
انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان مختلف شعبوں بالخصوص تجارتی اور اقتصادی میدان میں تعاون کے فروغ پرامید کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ شام میں امن کی واپسی شامی عوام کیلئے خدمات فراہم کرنے کا ایک اہم موقع ہے-
ایڈمیرل شمخانی نے کہا کہ جیسا کہ ہم دہشت گردی کے خلاف جنگ میں شامی حکومت اور عوام کی حمایت کی ویسا بھی شام کی تعمیر نو مہم میں شامی حکومت اور قوم کی کسی بھی حمایت سے دریغ نہیں کریں گے۔
انہوں نے شام کی آئینی کمیٹی میں سول سوسائٹی کے ارکان کو شریک ہونے کے حوالے سے شامی حکومت کی کوششوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ مغربی ممالک کی جانب سے سیاسی طریقہ حل کے پروسس میں روڑے اٹکانا اس بات کی عکاسی کر رہا ہے کہ ان کے سوچے سمجھے بغیر موقف صرف شامی بحران کے تسلسل کی حمایت کے سلسلے میں ہیں۔
اعلی ایرانی عہدیدار نے اسلامی ممالک کے درمیان تعاون کے فروغ پر زور دیتے ہوئے کہا کہ عالم اسلام کے مشترکہ دشمن بالخصوص امریکہ اور ناجائز صہیونی ریاست، اسلامی ممالک کے درمیان تفرقہ اور انتشار پھیلانے کے ذریعے ان کے مفادات بشمول امن و سلامتی اور اقتصادی ترقی کو تباہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔
اس موقع پر شامی وزیر خارجہ نے شامی بحران کے سیاسی حل پر زور دیتے ہوئے کہا خطے میں قیام امن و سلامتی، صرف دہشت گردوں کے حامی ممالک کے موقفوں کی تبدیلی سے حاصل ہوگا۔
انہوں نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اسلامی جمہوریہ ایران کی جانب سے شامی حکومت اور قوم کی حمایت کا شکریہ ادا کیا۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@