یورپ نے اقتصادی شعبے میں بڑا قدم اٹھا لیا: اعلی ایرانی جوہری عہدیدار

تہران، 2 فروری، ارنا – ایرانی ایٹمی توانائی ادارے کے سربراہ نے ایران کیلئے یورپ کے مخصوص مالیاتی میکنزم ''INSTEX'' کے اجرا کو بڑا قدم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہمیں انتظار ہے کہ یورپ اس راستے میں تیز رفتاری سے حتمی اقدامات اٹھائے گا.

یہ بات "علی اکبر صالحی" نے ہفتہ کے روز اسلامی انقلاب کی 40ویں سالگرہ کی کارکردگیوں کی نمائش کی افتتاحی تقریب میں صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے اسلامی جمہوریہ ایران کے لئے یورپ کے مخصوص مالیاتی نظام SPV کے نفاذ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یورپ کے مخصوص مالیاتی میکنزم ''INSTEX'' ایک بڑا قدم ہے اور وہ کم سے کم مدت میں اپنے تمام وعدوں کو پورا کرے.
صالحی نے کہا کہ اگر یورپ جوہری معاہدے کے حوالے سے اپنے وعدوں پر من وعن عمل نہ کرے تو ہم تکنیکی طور پر جوابی ردعمل دینے کے لئے آمادہ ہیں.
یاد رہے کہ صالحی نے گزشتہ ہفتہ اس بات پر انتباہ کیا کہ اگر یورپی حکام اپنے وعدوں پر عملدرآمد نہ کرے آئندہ میں ہونے والے اقدامات نہ اسلامی جمہوریہ ایران، نہ یورپ اور نہ جوہری معاہدے کے دوسرے فریقین کے لئے خوشگوار نہیں ہوگا.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ رومانیہ میں یورپی یونین کے وزارتی اجلاس کے موقع پر جرمنی، برطانیہ اور فرانس کے وزرائے خارجہ نے ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں ایران کے لئے مخصوص مالیاتی نظام کے اجرا کا باضابطہ طور پر اعلان کردیا.
رپورٹ کے مطابق، یورپ کے مخصوص مالیاتی چینل کا مرکزی دفتر پیرس میں ہوگا جسے INSTEX کا نام دیا گیا ہے اور یہ تجارتی تبادلے کے سازوسامان کا مخفف ہے.
تینوں یورپی ممالک انسٹیکس میکنزم کے حصہ دار ہوں گے اور نامور جرمن بینکر اس کی قیادت کریں گے.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@