انسٹیکس میکنزم، ایران جوہری معاہدے پر یورپی پاسداری کی علامت

لندن، 1 فروری، ارنا - برطانوی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ایران کے ساتھ مالیاتی لین دین کو جاری رکھنے سے متعلق انسٹیکس میکنزم کا اجرا جوہری معاہدے پر یورپ کی پاسداری کی علامت ہے.

''جیرمی ہنٹ'' نے رومانیہ میں یورپی یونین کے وزرائے خارجہ کے اجلاس کے بعد کہا کہ ایران یورپ مالیاتی میکنزم INSTEX ایران جوہری معاہدے پر قائم رہنے کا عملی اقدام ہے.
انہوں نے کہا کہ آج جوہری معاہدے پر قائم رہنے سے متعلق ایک بہت بڑا قدم اٹھایا گیا جس کا مقصد ایرانی عوام سے متعلق پابندیوں کی معطلی کو جاری رکھنا ہے.
برطانوی وزیر خارجہ نے مزید بتایا کہ برطانیہ نے جرمنی اور فرانس کے ساتھ مل کر مخصوص مالیاتی میکنزم کا اعلان کردیا جس کے فعال ہونے کے بعد ایران کے ساتھ تجارتی سرگرمیوں میں آسانیاں پیدا ہوں گی.
انہوں نے کہا کہ ہم انسٹیکس میکنزم کے تحت پہلے مرحلے میں ایرانی عوام کو درپیش اشیائے ضرورت جیسا کہ خوراک اور ادویات کی فراہمی پر توجہ دیں گے.
جیرمی ہنٹ نے مزید کہا کہ انسٹیکس میکنزم ایک سنگ میل ہے، ہمیں مزید اقدامات کرنے چاہئیں، تینوں یورپی ممالک کی یہ کوشش ہے کہ قریبی تعاون سے اس میکنزم کو تکنیکی اور قانونی لحاظ سے فعال بنائیں.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ رومانیہ میں یورپی یونین کے وزارتی اجلاس کے بعد جرمنی، برطانیہ اور فرانس کے وزرائے خارجہ نے ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں ایران کے لئے مخصوص مالیاتی نظام کے اجرا کا باضابطہ طور پر اعلان کردیا.
رپورٹ کے مطابق، یورپ کے مخصوص مالیاتی چینل کا مرکزی دفتر پیرس میں ہوگا جسے INSTEX کا نام دیا گیا ہے اور یہ ''تجارتی تبادلے کے سازوسامان'' کا مخفف ہے.
تینوں یورپی ممالک انسٹیکس میکنزم کے حصہ دار ہوں گے اور نامور جرمن بینکر اس کی قیادت کریں گے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@