ایران، عراق اور شام کے درمیان تعلقات کی توسیع کے خواہاں ہیں: نائب ایرانی صدر

تہران، 29 جنوری، ارنا- سنئیر نائب ایرانی صدر نے شامی صدر کیساتھ ملاقات میں، ایران، عراق اور شام کے درمیان تعلقات کے فروغ پر زور دیتے ہوئے کہا کہ شام کی جنگ، خطی سلامتی کے خلاف جنگ تھی جو شامی حکومت اور عوام اور اس کے اتحادیوں کی حکمت عملی سے شکست کھائی۔

"اسحاق جہانگیری" نے شام کے صدر "بشار اسد" کے ساتھ ملاقات میں، دونوں ممالک کے درمیان دیرینہ تعلقات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ خوش قسمتی سے حالیہ سالوں کے دوران، ایران اور شام کے تعلقات میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔
نائب ایرانی صدر نے، شام ایران مشترکہ اعلی کمیشن کی نشست میں، دونوں ممالک کے درمیان تعمیری مذاکرات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہونے والی نشست میں طے پانے والے اسٹریٹجک معاہدے، ایران اور شام کے درمیان تعلقات کو فروغ دینے میں معاون ثابت ہوں گے۔
انہوں نے شام کی جنگ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ شام میں جنگ در اصل شامی حکومت اور عوام کے خلاف جنگ نہ تھی بلکہ خطی سلامتی کے خلاف جنگ تھی جو شامی حکومت اور عوام اور ان کے اتحادیوں کی حکمت عملی سے شکست کھائی۔
اس موقع پر شامی صدر نے ایران میں اسلامی انقلاب کی 40 ویں سالگرہ کے موقع پر ایرانی عوام و حکومت کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ 40 سالوں کے دوران، ایران اور شام کے درمیان تعلقات اور مضبوط ہوگئے ہیں اور دونوں ممالک ہمیشہ مشکل حالات میں ایک دوسرے کیساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔
بشار اسد نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں شامی حکومت و عوام کی مزاحمت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف فتح اور شام کی آزادی کے بعد اب ملک کی تعمیر نو ہماری اولین ترجیح ہے۔
انہوں نے شام کی تعمیر نو میں ایران کی سرکاری اور نجی کمپنیوں کی شراکت داری سمیت، اس مہم میں جمہوریہ اسلامی ایران سے تعاون کا مطالبہ کیا ہے۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@