یورپی اتحاد امریکہ مخالف مؤقف کو مزید مضبوط بناسکتا ہے: ایرانی سفیر

لندن، 29 جنوری، ارنا - برطانیہ میں تعینات سفیر اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ اگر یورپی ممالک سلامتی کونسل میں ایک مشترکہ اتحاد بنائیں تو وہ عالمی معاملات سے متعلق امریکی مخالف مؤقف کو مزید مضبوط بناسکتے ہیں.

''حمید بعیدی نژاد'' نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں یورپی حکومتوں کی جانب سے ایک مشترکہ اتحاد بنا کر عالمی مسائل سے متعلق امریکہ کے سامنے یورپی یونین کے مؤقف کو مضبوط کیا جاسکتا ہے.
انہوں نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں برسلز میں ہونے والی سلامتی کونسل کے یورپی اراکین کی حالیہ نشست کا حوالہ دیتے ہوئے مزید کہا کہ یہ فیصلہ نئی حکمت عملی کا آغاز سمجھا جاسکتا ہے.
ایرانی سفیر نے بتایا کہ امریکہ اور پولینڈ اپنے اس مؤقف پر مُصر ہیں کہ وارسا کانفرنس اینٹی ایران نہیں بلکہ اس کا مقصد مشرق وسطی کے حالات پر گفتگو کرنا ہے. دوسری جانب ایک سنیئر امریکی عہدیدار نے بھی کہا ہے کہ ہمارا مقصد ایران یا اس کے خلاف نئے اتحاد کی تشکیل نہیں.
انہوں نے مزید بتایا کہ برطانوی وزیر خارجہ اس شرط پر شرکت کریں گے کہ امریکہ آئندہ کانفرس میں یمن سے متعلق نشست رکھے گا جبکہ جرمنی اور فرانس نے ابھی تک یہ نہیں واضح کیا کہ وہ وارسا کانفرس میں کس سطح پر شریک ہوں گے.
حمید بعیدی نژاد نے کہا کہ فلسطینی وزیرخارجہ کو بھی مدعو کیا گیا ہے لہذا یہ تاثر ظاہر ہورہا ہے کہ وارسا کانفرنس کی توجہ ایران پر مرکوز نہیں ہے.
یاد رہے کہ یورپی یونین کی چیف خارجہ پالیسی نے کہا ہے کہ وہ وارسا کانفرس میں شریک نہیں ہوں گی دوسری جانب روس نے بھی وارسال کانفرنس کو اینٹی ایران سمٹ قرار دیتے ہوئے اس کانفرنس میں شرکت نے کرنے کا فیصلہ کیا ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@