آسٹریا نے جوہری معاہدے سے متعلق ایرانی کارکردگی کو سراہا

لندن، 29 جنوری، ارنا - آسٹرین حکومت نے ایران جوہری معاہدے میں باقی رہنے سے متعلق تہران حکومت کی پالیسی کو سراہتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ ایران سے متعلق یورپ کے مالیاتی میکنزم کا جلد نفاذ ہوگا.

آسٹرین دفترخارجہ کے سیکریٹری جنرل ''جوہانس پیٹرلک'' نے ویانا میں ایرانی وزیرخارجہ کے معاون خصوصی برائے سیاسی امور ''سید عباس عراقچی'' ملاقات کی.
اس موقع پر انہوں نے جوہری معاہدے سے متعلق ایران کی کارکردگی اور منطقی رویے پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ یورپ کے آئندہ مالیاتی میکنزم سے ایران کو معاشی ثمرات ملنے میں مدد ملے گی.
انہوں نے مزید کہا کہ مغربی ایشیا میں ایران ایک اہم ملک جسے آسٹرین خارجہ پالیسی میں بھی خصوصی اہمیت حاصل ہے. دونوں ممالک سیاسی لحاظ سے پُرعزم ہیں جن کا مقصد دوطرفہ تعلقات، خطی اور عالمی سطح پر باہمی مشاورت کو جاری رکھنا ہے.
آسٹریا کے سیکریٹری جنرل خارجہ نے بتایا کہ ان کا ملک ایران جوہری معاہدے کی حمایت کرتا ہے اور یورپی یونین کے نقطہ نظر کے مطابق اس معاہدے کو ایک کامیاب عالمی معاہدہ سمجھتا ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ آسٹریا کی چھوٹی اور درمیانی کمپنیاں ایران میں کام کرنے میں دلچسپی رکھتی ہیں.
اس ملاقات میں اعلی ایرانی سفارتکار نے بھی جوہری معاہدے سے متعلق آسٹرین حکومت کے تعمیری اور مثبت مؤقف کو سراہا.
عراقچی نے شام، یمن اور افغانستان سے متعلق ایران کی پالیسی پر روشنی ڈالی اور مزید کہا کہ ایران کی علاقائی پالیسی باہمی تعاون پر مبنی ہے جس کا مقصد خطے میں امن و استحکام اور سلامتی کو مضبوط بنانا ہے اور اسی مقصد سے ہم شام، یمن اور افغانستان پر اپنا تعمیری کردار ادا کرتے رہیں گے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@