یورپ وقت ختم ہونے سے پہلے اپنے وعدوں پر عمل کرے: ایران

تہران، 27 جنوری، ارنا – ایرانی ایٹمی توانائی ادارے کے سربراہ نے مخصوص مالیاتی نظام کے قیام کے لئے یورپ کے فیصلوں کا حوالہ دیتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ یورپ وقت ختم ہونے سے پہلے اپنے وعدوں پر عمل کرے.

یہ بات "علی اکبر صالحی" نے گزشتہ روز ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے ایران سے متعلق یورپ کی جانب سے خاص مقصد کے لئے بنائے جانے والے نظام (SPV) پر یورپی کارکردگی کو مایوس کن قرار دیتے ہوئے کہا کہ اگر یورپی حکام اپنے وعدوں پر عملدرآمد نہ کرے آئندہ میں ہونے والے اقدامات نہ اسلامی جمہوریہ ایران، نہ یورپ اور نہ جوہری معاہدے کے دوسرے فریقین کے لئے خوشگوار نہیں ہوگا.
صالحی نے کہا کہ جوہری معاہدے کے لئے بہت ہی کوششیں کی گئی ہیں لہذا ہم باقی رہنے والے فریقین کی جانب سے اس معاہدے کی خلاف ورزی نہیں چاہتے ہیں.
انہوں نے اس بات پر زور دیا اور کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران جوہری معاہدے کے تمام وعدوں پر قائم ہے اور عالمی ایٹمی توانائی ادارے کی 13 رپورٹز اس حقیقت کی علامت ہے مگر یورپ کی جانب سے خاص مقصد کے لئے بنائے جانے والے نظام (SPV) کو بعض وجوہات کی بنا پر کسی حد تک سست روی کا سامنا ہے.
ایرانی عہدیدار نے کہا کہ یورپی یونین کے سفارتی ذرائع کے مطابق، اسلامی جمہوریہ ایران کے لئے یورپ کے مخصوص مالیاتی نظام کی 28 جنوری کو باقاعدہ رونمائی کی جائے گی.
انہوں نے مزید کہا کہ جوہری معاہدے میں شامل تین یورپی ممالک تعمیری مشاورت کے ذریعے خصوصی مالیاتی نظام کے نفاذ کو یقینی بنائیں گے.
ایرانی ایٹمی توانائی ادارے کے سربراہ نے کہا کہ اگر جوہری معاہدے میں کوئی فریق کامیاب نہیں ہوئے تو یورپ کے مفاد میں نہیں ہوگا کیونکہ یہ معاہدہ سیکورٹی کے لحاظ سے یورپیوں کے لئے بہت ہی تعمیری اور اہم ہے.
انہوں نے کہا کہ آج مشرق وسطی بہت مسائل اور مشکلات کا شکار ہے لہذا اگر جوہری معاہدے کے مسائل علاقائی مشکلات میں اضافہ ہوئے تو کون اس سے فائدہ اٹھا سکتا ہے؟
صالحی نے کہا کہ ہم یورپی ممالک سے مطالبہ کرتا ہے کہ وہ ایران کے ساتھ تجارت کے لئے مخصوص مالیاتی لین دین کے میکنزم کو جلد نافذ کریں.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@