امریکہ میں گرفتار خاتون ایرانی صحافی کی رہائی

نیو یارک، 24 جنوری، ارنا - امریکہ کی جانب سے گزشتہ ہفتوں میں بلاجواز گرفتار ہونے والی ایرانی انگریزی چینل 'پریس ٹی وی' کی اینکرپرسن ''مرضیہ ہاشمی'' کو رہا کردیا گیا ہے.

تفصیلات کے مطابق، خاتون ایرانی صحافی کو 11 دن امریکی جیل میں قید رہنے کے بعد رہا کردیا گیا ہے.
امریکہ میں ایرانی مفادات کے تحفظ مرکز کے سربراہ ''مہدی عاطفت'' نے ارنا نیوز کے نمائندے سے گفتگو کرتے ہوئے مرضیہ ہاشمی کی رہائی کی تصدیق کردی.
انہوں نے بتایا کہ ایرانی دفتر تحفظ مفادات خاتون صحافی کی گرفتاری کے پہلے دن سے اس مسئلے کو دیکھ رہا تھا اور متعلہ حکام کے ساتھ رابطے میں تھا.
انہوں نے مزید بتایا کہ امریکی پولیس کے مطابق مرضیہ ہاشمی پر کوئی الزام نہیں تھا بلکہ انھیں وعدہ معاف گواہ کے طور پر گرفتار کیا گیا تھا لہذا یہ بات طے تھی کہ ان کو عدالت میں شہادت دینے کے بعد رہا کردیا جائے گا.
ایرانی سفارتکار نے کہا کہ مرضیہ ہاشمی کی رہائی میں تحریک امت اسلام کی احتجاجی مہم اور واشنگٹن میں دیگر احتجاجی مظاہروں میں بھی کافی کردار ادا کیا.
یاد رہے کہ مرضیہ ہاشمی کو گزشتہ ہفتوں میں سینٹ لوئس لبرٹ بین الاقوامی ایئر پورٹ پر گرفتار کرلیا گیا جس کے بعد ایف بی آئی کے اہلکاروں نے انھیں واشنگٹن میں موجود جیل میں منتقل کردیا.
پریس ٹی وی کے مطابق، مرضیہ ہاشمی نے اپنے اہل خانہ کو بتایا کہ پولیس نے ان کے ساتھ توہین آمیز رویہ اپنایا.
انہوں نے بتایا کہ اہلکاروں نے جیل میں منتقلی تک ان کے ساتھ ناروا سلوک کیا جبکہ ان کے سر سے حجاب بھی اتارا گیا.
ایرانی وزیر خارجہ نے اس کے ردعمل میں کہا تھا کہ امریکہ میں خاتون ایرانی رپورٹر کی گرفتاری سیاسی عمل ہے لہذا امریکی انتظامیہ انھیں فوری طور پر رہا کرے.
محمد جواد ظریف نے بتایا کہ پریس ٹی وی کی اینکرپرسن کی گرفتاری ایک سیاسی کھیل ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@