وارسا کانفرنس میں ایران کو دعوت دینے کا حتمی فیصلہ نہیں کیا ہے: پولش صدر

تہران،23 جنوری، ارنا۔ پولینڈ کے صدر نے کہا ہے کہ وارسا کانفرنس میں ایران کو دعوت دینے کا آپشن زیر غور ہے لیکن ان کا ملک ابھی اس حوالے سے حتمی فیصلہ نہیں کیا ہے۔

"آندژی دودا" کا یہ اظہارات ایسے وقت سامنے آیا جب گزشتہ دو دن پہلے،پولینڈ کے وزیر خارجہ "یاسک چاپوویچ" نے کہا تھا کہ پولش حکومت نے ایران کو وارسا میں منعقد ہونے والے کانفرنس میں شرکت کرنے کی دعوت نہیں دی ہے۔
پولش وزیر خارجہ نے دعوی کیا تھا کہ وارسا کانفرنس میں ایران کی شرکت، مذاکرات میں رکاوٹ ڈالے گی۔
ان باتوں کے باوجود پولینڈ کے نائب وزیر خارجہ اپنے حالیہ دورہ ایران کے موقع پر دونوں ممالک کے درمیان تعمیری تعلقات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران مشرق وسطی کے ایک اہم ملک کے ناطے سے علاقائی معلاملات میں کلیدی کردار ادا کر رہا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ وارسا کانفرنس کا مقصد مشرق وسطی کے بحرانوں کے حل کے لئے مدد فراہم کرنا ہے اور ہم اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف کسی اقدام کی اجازت نہیں دیں گے۔
واضح رہے کہ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کے مطابق امریکہ کی میزبانی میں مشرق وسطی میں امن و سلامتی کے نام نہاد موضوع پر ایران کے معاملے پر ایک بین الاقوامی کانفرنس آئندہ ماہ 13 فروری کو پولینڈ میں کرائی جائے گی تاہم یوریی یونین کے اہم ممالک کے وزرا سمیت یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کی سربراہ "فڈریکا مغرینی" بھی اس اجلاس میں شریک نہیں ہوں گے۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@