امریکی عزائم کے باوجود ضرورت کے مطابق تیل کی فروخت کر رہے ہیں: نائب ایرانی صدر

کرمان، 21 جنوری، ارنا- نائب ایرانی صدر نے کہا ہے کہ ایرانی تیل کی درآمدات کی روک تھام کے حوالے سے امریکی منصوبہ بندیوں کے باوجود ہم اپنی ضرورت کے مطابق تیل کی فروخت کر رہے ہیں۔

سنیئر"اسحاق جہانگیری" نے مزید کہا کہ ایرانی تیل کی درآمدات اور تجارتی لین دین پر رکاوٹیں ڈالنے سمیت ملک میں ضروری منصوعات بشمول ادویات کی درآمدات کے خلاف امریکی منصوبہ بندیوں کے باوجود، ہم اپنی ضرورت کے مطابق تیل کی فروخت کرتے ہوئے تیل کی ادئیگی کے لئے اپنے طریقوں کا استعمال کرتے ہیں۔
یہ بات انہوں نے ملک کے صوبے کرمان کے دورے پر اس صوبے کے مختلف شہروں میں گیس کی فراہمی منصوبے کی ایک تقریب میں کہی۔
جہانگیری نے مزید کہا کہ ایران میں اسلامی انقلاب کی 40 ویں سالگرہ کے موقع پر مختلف شعبوں بشمول شہری ترقی اور مواصلات، ریلوے، صنعت، ماڈرن ٹیکنالوجی، اور جوہری توانائی میں انتہایی ترقی حاصل ہونے کے ساتھ ہم ترقی کی راہ پر گامزن ہیں جبکہ ایران کے خلاف امریکہ اور مغربی ممالک کی دشمنی پر مبنی پالیسی ویسے ہی باقی ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ آج، امریکیوں کو محسوس ہوتا ہے کہ انھیں اسلامی جمہوریہ ایران سے نمٹنے اور ایرانی عوام پر دباؤ ڈالنا چاہیے۔
نائب ایرانی صدر نے کہا کہ ایران جوہری معاہدے سےغیر قانونی علیحدگی کی بدولت امریکہ پوری دنیا میں بدنام ہوگیا ہے جبکہ ایران بدستور سربلند رہے گا۔
انہوں نے کہا کہ امریکیوں کا کہنا تھا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی عمر 40 سال سے آگے نہیں بڑھے گی جبکہ ان کی خام خیالیوں کے باوجود ہم بڑے شاندار طریقے سے ایران میں اسلامی انقلاب کی 40 ویں سالگرہ کا جشن منائیں گے۔
انہوں نے گزشتہ 40 سالوں سے اب تک ملک میں خوشحالی اور ترقی کی راہ میں بڑے منصوبوں کو انجام پہنچانے کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ مثال کے طور پر ہم نے ملک کے مختلف حصوں تک گیس کی فراہمی کے حوالے سے انتہایی ترقی کی ہے۔
سنیئر جہانگیری نے کہا کہ گزشتہ کے مقابلے میں ایرانی جنوبی پارس گیس فیلڈ سے گیس کی پیدواری میں قابل قدر اضافہ دیکھنے میں آیا ہے جس سے گیس کی پیداواری روزانہ 60 لاکھ میٹر کیوبک تک پہنچ گئی ہے۔
9467*274**ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@