بھارت اور وسطی ایشیا کے تجارتی تعلقات کی توسیع میں چابہار بندرگاہ کا کردار اہم قرار

تہران، 20 جنوری، ارنا- بھارتی اخبار "ٹایمز آف انڈیا" نے لکھا ہے کہ ایرانی بندرگاہ چابہار کو بھارت اور وسطی ایشیائی ممالک بشمول افغانستان و ازبکستان کے درمیان تجارتی تعلقات کی توسیع میں نہایت اہم کردار حاصل ہے۔

ٹایمز آف انڈیا نے بھارتی وزیر اعظم "نریندرمودی" اور ازبکستان کے صدر"شوکت میرضیائف" کے درمیان حالیہ ملاقات پر تبصرہ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ بھارت کو وسطی ایشیا سے منسلک ہونے کیلئے ازبکستان ایک اہم گیٹ وے ہے۔
رپورٹ کے مطابق بھارتی حکومت نے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ چابہار میں "شہید بہشتی" بندرگاہ کے پہلے فیز کو مکمل کرنے کے ذریعے افغانستان سے براہ راست منسلک ہونے سمیت، شمال-جنوب کوریڈور کے ذریعے اپنے مصنوعات کو وسطی ایشیا میں برآمد کر سکے گا۔
اس رپورٹ میں مزید آیا ہے کہ چابہار میں بھارت کی سرمایہ کاری، اسے وسطی ایشیائی ممالک کے ساتھ تجارتی تعلقات کو فروغ دینے میں مدد ملے گی۔
یاد رہے کہ بھارتی وزیر خارجہ "سشما سوراج" نے بھی حالیہ دنوں میں ازبکستان کے شہر سمرقند میں افغانستان سمیت وسطی ایشیا کے وزرائے خارجہ کی ایک نشست میں ایرانی بندرگاہ چابہار کو افغانستان اور دوسرے خطی ممالک میں مصنوعات کی منتقلی کیلئے سب سے زیادہ قابل بھروسہ تجارتی راستہ قرار دے دیا۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@