خاتون ایرانی رپورٹر کیخلاف امریکی رویہ ان کی جھوٹی پالیسی کی علامت ہے: ایران

تہران، 20 جنوری، ارنا – ایرانی مجلس (پارلیمنٹ) کے اسپیکر نے کہا ہے کہ ایران کے انگریزی نیوز چینل پریس ٹی وی کی خاتون رپورٹر کے خلاف امریکہ کا رویہ عالمی میدان میں ان کی جھوٹی پالیسی کی علامت ہے.

یہ بات "علی لاریجانی" نے اتوار کے روز ایرانی پارلیمنٹ کے اراکین کے ساتھ منعقد ہونے والے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ ایران کے انگریزی نیوز چینل پریس ٹی وی سے منسلک خاتون امریکی رپورٹر ''مرضیہ ہاشمی'' کے خلاف امریکہ کا غیر قانونی رویہ انسانی حقوق کی کھلی خلاف ورزی ہے.
لاریجانی نے کہا کہ اگر یہ واقعہ اسلامی جمہوریہ ایران میں پیش آیا تھا تو امریکیوں نے ایران کے خلاف انسانی حقوق کے دفاع کے بے بنیاد دعوی کئے ہیں.
یاد رہے کہ مرضیہ ہاشمی کو گزشتہ ہفتے سینٹ لوئس لبرٹ بین الاقوامی ایئر پورٹ پر گرفتار کرلیا گیا جس کے بعد ایف بی آئی کے اہلکاروں نے انھیں واشنگٹن میں موجود جیل میں منتقل کردیا.
خاتون رپورٹر کے اہل خانہ 48 گھنٹوں تک ان کی صورتحال سے لاعلم رہے جبکہ کچھ دن گزرنے کے بعد اہل خانہ کو ان کی گرفتاری سے مطلع کیا گیا.
پریس ٹی وی کے مطابق، مرضیہ ہاشمی نے اپنے اہل خانہ کو بتایا کہ پولیس نے ان کے ساتھ توہین آمیز رویہ اپنایا.
انہوں نے بتایا کہ اہلکاروں نے جیل میں منتقلی تک ان کے ساتھ ناروا سلوک کیا جبکہ ان کے سر سے حجاب بھی اتارا گیا.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@