ایران کا پاکستان سے گیس پائپ لائن کو حتمی شکل دینے کا مطالبہ

اسلام آباد، 18 جنوری، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ پاک ایران گیس پائپ لائن کی فوری تکمیل کے لئے اقدامات کئے جائیں.

یہ بات پاکستان میں تعینات ایرانی سفیر ''مہدی ہنردوست'' نے پاکستانی اردو اخبار ''جناح'' کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہی.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران نے پانچ سال پہلے گیس منصوبے سے متعلق اپنی حدود میں پائپ لائن بچھانے کے عمل کو مکمل کیا تاہم پاکستان کی جانب سے کوئی قدم نہ اٹھائے جائے کی وجہ سے یہ منصوبہ تاخیر کا شکار ہوا ہے.
انہوں نے کہا کہ قرارداد کے مطابق، پاک ایران گیس منصوبہ دسمبر 2014 کو مکمل ہونا چاہئے تھا جس کی مدد سے پاکستان کو درپیش توانائی کے سنگین مسائل پر قابو پایا جاسکتا ہے.
ہنردوست نے پاک ایران تعلقات اور موجودہ تعاون پر تبصرہ کرتے ہوئے مزید کہا کہ ایران اور پاکستان علاقائی امن و استحکام کے لئے مفید اور تعمیری کردار ادا کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں.
انہوں نے افغان مسئلے سے متعلق کہا کہ ایران نے افغانستان میں قیام امن و سلامتی سے متعلق طالبان اور کابل حکومت کے درمیان مذاکرات پر پاکستان کو اعتماد میں لیا ہے.
ایرانی سفیر نے پاک ایران تجارتی حجم کے حوالے سے بتایا کہ تمام مشکلات کے باوجود دونوں ممالک کی تجارتی شرح اس وقت 1.5 ارب ڈالر پر ہے جبکہ ایران بھارت تجارتی حجم 8 ارب ڈالر ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران اور پاکستان کے درمیان برادرانہ تعلقات قائم ہیں اور مختلف شعبوں میں مشترکہ سفارتی کوششوں جاری ہیں تاہم عالمی دباو بالخصوص امریکی پابندیوں کی وجہ سے پاک ایران تجارت متاثر ہوئی ہے.
انہوں نے یمنی مسئلے سے متعلق کہا کہ ایران کی یہ خواہش ہے کہ تمام اسلامی ممالک آپس میں ایک ہو کر یمنی بحران کے حل کے لئے آگے بڑھیں اور اس کے علاوہ ایران نے اپنی تجاویز اسلامی تعاون تنظیم کو بھی پیش کیا ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@