داعش کو امریکہ نہیں، شام اور عراقی عوام نے شکست دی: ظریف

کربلا، 16 جنوری، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ داعش کے دہشتگردوں کو شکست دینے میں امریکہ نے کوئی کردار ادا نہیں کیا جبکہ اس جنگ کے اصل فاتح عراقی اور شامی عوام ہیں.

یہ بات ''محمد جواد ظریف'' نے دورہ عراق کے موقع پر ''کربلائے معلی'' میں ایران عراق اقتصادی فورم سے خطاب کرتے ہوئے کہی.
اس نشست میں نامور عراقی تاجر اور صنعت کار بالخصوص گورنر کربلا، نجف، بابل، میسان، واسط اور السماوہ اضلاع کے مقامی حکام بھی شریک تھے.
ایرانی وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ عراق اور شام کے عوام نے داعش کو شکست دی اور اس کامیابی میں امریکہ کا کوئی کردار نہیں ہے.
انہوں نے کہا کہ داعش پر غلبہ علاقائی قوموں کی کامیابی ہے اور اس کا امریکہ سے کوئی تعلق نہیں. عراق اور شام نے اپنے جوانوں اور بہادر سپاہیوں کے خون کا نذرانہ دے کر اپنی اقوام کو داعش سے نجات دلائی.
ظریف نے مزید کہا کہ ایران اور عراق کے ماضی اور مستقبل ایک دوسرے جڑے ہوئے ہیں. دہشتگردوں کے خلاف جنگ بالخصوص صدام کی آمریت کے خلاف جد و جہد میں ایرانی اور عراقی عوام نے مشترکہ طور پر اپنی جانوں کو قربان کیا. ایرانی اور عراقی عوام نے مل کر داعش کے خلاف جنگ میں شہادتیں دی ہیں.
انہوں نے کہا کہ ایران عراق کی توانائی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے آمادہ ہے. ہم دوطرفہ تجارت کے لئے ٹیرف کو صفر تک لانے کے لئے بھی تیار ہیں.
ایرانی وزیر خارجہ نے زائرین بالخصوص ایرانی شہریوں اور زائرین کی گرمجوشی سے میزبانی کرنے پر عراقی عوام کا تہہ دل سے شکریہ ادا کیا اور کہا کہ ہر سال ہمارے عراقی بھائی مختلف مناسبتوں بالخصوص اربعین کے ایام میں زائرین کی مثالی میزبانی کرتے ہیں.
انہوں نے مزید کہا کہ جب ایران اور عراق یہ عزم کریں کہ امریکہ ان کے تعلقات میں مداخلت کا حق نہیں رکھتا تو ہمارے تعلقات مزید بڑھیں گے. امریکی پابندیوں کے باجود ایران سالانہ 2 ارب ڈالر گیس اور بجلی عراق کو فراہم کرتا ہے.
ظریف نے بتایا کہ اس وقت ایران کی تکنیکی اور انجینئرنگ سروس فراہم کرنے والی 80 کمپنیاں عراق میں سرگرم ہیں جو 8 ارب ڈالر کے معاہدوں پر کام کررہی ہیں.
انہوں نے مزید کہا کہ تکنیکی اور انجینئرنگ لحاظ سے ایران خطے میں اچھی صلاحیت رکھنے والا ملک ہے اور ہم عراق کی تعمیر نو سے متعلق منصوبوں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے کی بھی صلاحیت رکھتے ہیں.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@