ایرانی سیٹلائیٹ لانچنگ عالمی قوانین کی خلاف ورزی نہیں: روس

ماسکو، 16 جنوری، ارنا - روس نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران کی جانب سے خلاء میں سیٹلائیٹ بھیجنا نہ عالمی قوانین کے برعکس ہے اور نہ ہی ایران کی میزائل سرگرمیوں پر تنقید کا کوئی جواز ہے.

یہ بات روس کے سنیئر جوہری مذاکرات کار اور نائب وزیر خارجہ ''سرگئی ریابکوف'' نے گزشتہ روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے ایران کے پیام سیٹلائیٹ کی خلاء میں لانچنگ سے متعلق کہا کہ ایرانی کی خلائی سرگرمیاں عالمی قوانین کی خلاف ورزی نہیں.
اعلی روسی سفارتکار نے مزید کہا کہ سیٹلائیٹ لانچنگ اور بیلسٹک میزائل دو الگ معاملہ ہے جن کے درمیان کوئی تعلق نہیں. سیٹلائیٹ لانچر کا مقصد الگ اور اس میں استعمال کی جانے والی ٹیکنالوجی میں بھی فرق ہے.
انہوں نے کہا کہ اگر ہم فرض کریں کہ یہ دونوں لانچر ایک جیسے ہوں جو میری نظر میں ایسا ہرگز ممکن نہیں، تب بھی ایران سے بے جا تنقید کرنے کا کوئی جواز نہیں.
سرگئی ریابکوف نے مزید کہا کہ ایران کی میزائل سرگرمیوں سے عالمی قوانین کی ہرگز خلاف ورزی نہیں ہوئی اور نہ ہی سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 میں ایران پر میزائل سرگرمیوں سے متعلق کوئی حد لاگو ہے بلکہ صرف ایران سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ جوہری ہتھیار لے جانے والے میزائل کے تجربے سے باز رہے.
انہوں نے بتایا کہ سیٹلائیٹ لانچر اور زمین سے زمین مار کرنے والے غیر جوہری میزائل ٹیکنالوجی اور جوہری ہتھیار لے جانے والے میزائل کی ٹیکنالوجی میں بہت فرق ہے اور اس حوالے سے تمام ماہرین واقف ہیں.
روس کے جوہری مذاکرات کار نے مزید بتایا کہ لہذا ایران کے میزائل پروگرام پر تنقید میں کوئی صداقت نہیں بلکہ یہ ایک غیرذمہ دارانہ اقدام ہے جس کا مقصد عالمی برادری کی توجہ ہٹانا ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@