ایران، عراق کیساتھ باہمی تجارت کو 20 ارب ڈالر تک بڑھانے کیلئے پرعزم

سلیمانیہ، 15 جنوری، ارنا- ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ عراق کے ساتھ باہمی تجارتی حجم کو سالانہ20 ارب ڈالر تک لے جانے کیلئے سنجیدہ منصوبہ بندیاں کی ہیں۔

یہ بات "محمد جواد ظریف" نے عراقی شہر سلمانیہ میں ایران اور عراق کے درمیان مشترکہ اقتصادی فورم کے موقع پر کہی۔
ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ ایران مخالف امریکی پابندیاں، ایران اور عراقی کردستان کے ساتھ اقتصادی تعلقات پر اثر انداز نہیں ہوں گی۔
انہوں نے مزید کہا کہ ہم عراقی کردستان کے عوام کو اپنے بہن بھائی سمجھتے ہیں کیونکہ ہمارے درمیان قریبی تعلقات ہیں اور ہر حالت میں ایک دوسرے کےساتھ کھڑے ہیں۔
ظریف نے مزید کہا کہ ہم عراقی کردستان میں جلد از جلد خودمختار حکومت قائم ہونے کے خواشمند ہیں۔
ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ ایران، عراقی کردستان اور بغداد کے درمیان تجارتی لین دین سے متعلق سہولیات فراہم کرنے کے سلسلے میں مثبت اور تعمیری مذاکرات کیا گیا ہے۔
انہوں نے ایران اور عراقی کردستان کے درمیان تعلقات کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہم تجارتی تعلقات کی توسیع کے ذریعے عراقی کردستان کے ساتھ اپنے تعلقات کو اور آگے بڑھیں گے۔
انہوں نے کہا کہ تجارت کے میدان میں نجی شعبوں کی مضبوط موجودگی کے ساتھ دونوں ممالک کے عوام کی زندگی میں مزید خوشحالی آئے گی۔
محمد جواد ظریف اتوار کو عراقی دارلحکومت بغداد پہنچ گئے جہاں انہوں نے عراقی حکام کے ساتھ الگ الگ ملاقاتیں کی۔
انہوں نے بغداد میں ایران اور عراق کے درمیان مشترکہ اقتصادی فورم میں بھی شرکت کی جس میں دونوں ممالک کے لاکھوں تجار اور تجارتی کمپنیاں شریک تھے۔
ایرانی وزیر خارجہ کل بروز پیر عراقی شہر کربلا روانہ ہوجائیں گے اور دونوں ممالک کے سرگرم اقتصادی کارکنوں کے درمیان ہونے والے اقتصادی فورم میں شرکت کریں گے۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@