ایرانی شہریوں سے متعلق برطانیہ کا مطالبہ، اندرونی معاملات میں دخل اندازی ہے: ایرانی سفیر

لندن، ارنا-14 جنوری، برطانیہ میں تعینات ایران کے سفیر نے کہا ہے کہ برطانیہ کے وزیر خارجہ نے انھیں دفتر خارجہ طلب کرکے خاص طور پر ایرانی خاتون قیدی "نازنین زاغری" اور ان کی بھوک ہرتال کے آغاز کے حوالے سے اپنے خدشات کا اظہارکیا ہے۔

یہ بات "حمید بعیدی نژاد" نے ارنا نمائندے کے ساتھ خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہی۔
ایرانی سفیر نے مزید کہا کہ انہوں نے برطانوی وزیر خارجہ کے اظہارات کے جواب میں کہا کہ ایران کے سارے دوہری شہریت رکھنے والے افراد اسلامی جمہوریہ ایران کے شہری ہیں اور انھیں شہری حقوق حاصل ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ نازنین زاغری کو بھی ایک شہری ایرانی کے ناطے سے شہری حقوق حاصل ہونے سمیت جیل میں ان کے لئے ساری طبی سہولتیں مسیر ہیں۔
بعیدی نژاد نے مزید کہا کہ زاغری، ایران میں برطانوی حکومت کیلئے جاسوسی کرنے کی بدولت قید میں ہیں لہذا برطانیہ کی جانب سے اس کیس میں مداخلت در اصل ایران کے اندرونی معاملات میں مداخلت کرنے کے مترادف ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ برطانیہ کی مداخلت نہ صرف اس حوالے سے مددگار ثابت نہیں ہوگا بلکہ برطانوی حکومت کی پالیسیوں کے خلاف ایرانی حکومت اور عوام کے منفی رد عمل کا باعث ہوگا۔
انہوں نے مزید کہا کہ ایران کے نزدیک برطانیہ کی اس کیس میں مداخلت، بالکل مسترد اور ناقابل قبول ہے۔
واضح رہے کہ ایرانی سفیر کی برطانوی محکمہ خارجہ طلبی سے پہلے برطانیہ کے سارے ذرائع ابلاغ نے بڑے وسیع پیمانے پر اس خبر کو کوریج کردی جس کا مطلب یہ ہے کہ اس اقدام کا اصل مقصد ایران کے خلاف منفی پروپینگڈہ پھیلانا ہے۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@