یورپی یونین ہالینڈ کیخلاف دہشتگردوں کو پناہ دینے پر ایکشن لے: رکن ایرانی مجلس

تہران، 11 جنوری، ارنا - ایرانی پارلیمنٹ کے ایک سنیئر رکن نے کہا ہے کہ ہالینڈ دہشتگرد عناصر کی مالی حمایت اور ان کی پشت پناہی کرتا ہے لہذا ہمیں توقع ہے کہ یورپی یونین اس کے خلاف ایکشن لے گی.

یہ بات رکن پارلیمانی کمیٹی برائے قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی علامہ ''مجتبی ذوالنور'' نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے ایران مخالف ڈچ حکومت کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے یورپی یونین پر زور دیا ہے کہ وہ ایران یورپ مشترکہ مفادات کے تحت ہالینڈ کے خلاف ایکشن لے.
انہوں نے مزید کہا کہ اصولی بات ہے کہ اگر کوئی ایران دشمن گروہ کا ایک بھی دہشتگرد ہالینڈ میں داخل ہو تو وہاں کی حکومت کو چاہئے کہ اسے ایران کے حوالے کرے مگر یہاں ایسا نہیں ہوا.
سنیئر رکن ایرانی پارلیمنٹ نے کہا کہ ہالینڈ کے الزامات میں کوئی صداقت نہیں اور نہ ہی ایران کسی دہشتگرد حملے میں ملوث رہا. اگر ایران دہشتگردی کے خلاف اقدام کرنے کا فیصلہ کرے تو وہ فخر کے ساتھ اور باضابطہ طور پر اعلان بھی کرے گا.
انہوں نے مزید کہا کہ ریاست ایران کا دہشتگردی سے کوئی تعلق نہیں اور نہ ہی ہمیں اس حوالے سے باتیں چھپانے کی ضرورت ہے.
علامہ ذوالنور نے کہا کہ ہالینڈ یورپی یونین کا رکن ملک ہے، لہذا ہماری توقع ہے کہ یورپی یونین اس کے خلاف ایکشن لے گی دوسری صورت میں یہ سلسلہ جاری رہا تو اس کا نقصان ایران یورپ تعلقات کو ہوگا.
یاد رہے کہ ڈچ وزیر خارجہ نے گزشتہ دنوں ایران پر ہالینڈ کے دو شہروں کے قتل کا بے بنیاد الزام لگایا تھا جس کے بعد یورپی یونین نے ایران کے ایک ادارے پر پابندیاں لگانے کی منظوری دے دی.
اسلامی جمہوریہ ایران نے اس کے ردعمل میں یورپی یونین اور ڈچ حکومت کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یورپی یونین دہشتگردی سے متعلق دہرہ معیار اپنایا ہوا ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@