بھارت ایران کو توانائی حصول کا قابل بھروسہ ذریعہ سمجھتا ہے: انصاری

تہران، 10 جنوری، ارنا - نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے اقتصادی امور نے کہا ہے کہ بھارت نے ہمیشہ اسلامی جمہوریہ ایران کو اپنی توانائی ضروریات کو پورا کرنے والا قابل بھروسہ ذریعہ سمجھا ہے.

''غلام رضا انصاری'' نے وزیرخارجہ محمد جواد ظریف کے تین روزہ دورہ بھارت کے اختتام پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ایران بھارت مالیاتی میکنزم اور تجارتی سرگرمیوں میں بھارتی کرنسی روپے کے استعمال پر روشنی ڈالی.
انہوں نے مزید کہا کہ پوری دنیا میں تیل آمدن ڈالر میں وصول کی جاتی ہے ہمارے تیل کی آمدنی بھی ڈالر میں ہوتی ہے مگر بھارت میں ہماری تیل آمدنی فوری طور پر روپے میں تبدیل ہوکر بھارتی بینک یو سی او میں موجود ایرانی اکاونٹس میں جمع ہوتی ہے.
انصاری نے کہا کہ بھارت 1.300 ارب کی آبادی ہے جو ایرانی مصنوعات بالخصوص پھلوں اور ڈرائی فروٹس کے لئے اچھی مارکیٹ بن سکتا ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ ہفتوں میں ایران کے مرکزی بینک اور بھارت وزارت خزانہ کے درمیان ایک جامع مفاہمت پر دستخط ہوئے جس کے تحت دونوں ممالک مالیاتی لین دین کے لئے موثر میکنزم تیار کریں گے اور اس کی مدد سے ایران بھارت میں اپنی آمدنی کو سرمایہ کاری اور اسٹاک مارکیٹ میں استعمال کرسکے گا.
نائب ایرانی وزیر خارجہ نے بتایا کہ ایران کے لئے یورپ کے مخصوص مالیاتی نظام SPV کے نفاذ کے بعد ہم بھارت میں روپے میں اپنی آمدنی کو یورو میں تبدیل کرسکتے ہیں اور اسے ایس پی وی نظام کی مدد سے کھلوائے جانے والے اکاؤنٹس میں جمع کرسکتے ہیں.
انہوں نے مزید کہا بھارت کے قوانین کے مطابق بینکوں میں موجود بڑی رقوم پر ٹیکس عائد ہوتا ہے مگر ایرانی آمدنی پر کوئی ٹیکس نہیں کیونکہ بھارت نے ہمیں ٹیکس استثنی دی ہوئی ہے.
غلام رضا انصاری نے کہا کہ ایران اور بھارت کی معیشتیں ایک دوسرے سے جڑی ہوئی ہیں، ایران توانائی کی پیداوار کرنے والا بڑا ملک اور بھارت توانائی کا استعمال کرنے والا بڑا ملک ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@