افغان عوام اپنے ملک کے مستقبل کا فیصلہ خود ہی کریں گے: ظریف

تہران، 9 جنوری، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ افغان عوام اپنے ملک کے مستقبل اور افغانستان میں طالبان کے کردار کے بارے میں خود فیصلہ کریں گے۔

"محمد جواد ظریف" نے بھارت کے "NDTV" چینیل کے ساتھ اںٹرویو دیتے ہوئے مزید کہا کہ افغانستان میں طالبان کے کردار کے بارے میں افغان عوام خود فیصلہ کریں گے جبکہ افغانستان کے ہمسایہ ممالک بھی یہ نہیں چاہتے ہیں کہ طالبان پورے افغانستان پر کنٹرول حاصل کرلے۔
ایرانی وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ خطے میں کسی کو بھی اس بات پر یقین نہیں ہے کہ افغانستان پر طالبان کا کنٹرول اس ملک میں قیام امن کا باعث ہوگا۔
ظریف جو تیں روزہ دورے پر بھارت میں موجود ہیں نے کہا کہ ایران، افغانستان سے ملحقہ سرحدی صوبوں کی امن و سلامتی کو یقینی بنانے کے حوالے سے طالبان کے ساتھ رابطے میں ہے۔
انہوں نے افغانستان میں 18 سالہ جنگ کے اختتام اور افغان امن عمل سے متعلق ہونے والی کوششوں کے تناظر میں کہا کہ طالبان کو بھی افغانستان کے مستقبل میں کردار اد کرنا چاہیے لیکن مرکزی دھارے کے طور پر نہیں۔
ظریف نے مزید کہا کہ لگتا ہے کہ افغانستان کا مستقبل، طالبان کے کردار بغیر نہیں بنے گا لیکن ہمارا عقیدہ ہے کہ افغانستان کے مستقبل میں طالبان کا کردار مرکزی دھارے کے طور پر نہیں ہونا چاہیے۔
انہوں نے افغان امن عمل سے متعلق پاکستان کے کردار کے بارے میں کہا کہ انتہا پسند عناصر پاکستان کے لئے بھی ایک بہت بڑے خطرے ہیں۔
ایرانی وزیر خارجہ نے پاکستان کی جانب دہشت گرد گروہوں کی حمایت سے متعلق سوال کے جواب میں کہا کہ پاکستان نے افغانستان کے حوالے سے تعمیری اور مثبت موقف اپنایا ہے اور ہمیں یقین ہے کہ پاکستان بھی نہیں چاہتا ہے کہ انتہا پسند گروہ افغانستان پر احاطہ کرلیں کیونکہ یہ انتہا پسند اور دہشت گرد عناصر پاکستان کے لئے بھی بہت بڑے خطرے ہیں۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@