چابہار میں بھارتی سرمایہ کاری کسی ایک سطح تک محدود نہیں: ایرانی سفیر

نئی دہلی، 9 جنوری، ارنا - بھارت میں تعینات ایرانی سفیر نے کہا ہے کہ بھارتی کمپنیاں چابہار بندرگاہ سے متعلق تعاون کے لئے پختہ ارادہ رکھتی ہیں اسی لئے انہوں نے یہاں سرمایہ کاری کے لئے کسی قسم کی حد کا تعین نہیں کیا ہے.

''علی چگنی'' نے ایرانی وزیرخارجہ کے دورہ بھارت کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ ایران مخالف امریکی پابندیوں کے بعد بھارت نے ایران کے ساتھ تعاون کے لئے سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے تعلقات کی توسیع میں آزادانہ طور پر عمل کیا.
انہوں نے کہا کہ بھارت کی جانب سے مستقبل میں ایران کے ساتھ تعلقات نہ بڑھانے کا کوئی اشارہ نہیں بلکہ اس کے برعکس بھارتی حکام ایران کے ساتھ تمام شعبوں بالخصوص اقتصادی لحاظ سے باہمی تعاون کو مزید بڑھانے کے خواہاں ہیں.
ایرانی سفیر نے مزید کہا کہ ایران بھارت تعلقات کو مزید قریب لانے کے میکنزم پر غور کیا جارہا ہے.
انہوں نے بتایا کہ مشترکہ سرمایہ کاری کے علاوہ اقتصادی شعبے سے متعلق بنیادی ڈھانے کے حوالے سے بھی ایران اور بھارت کے درمیان میکنزم موثر رہا ہے.
علی چگنی نے مزید بتایا کہ ایرانی تیل خریدنے والی کمپنیوں کو ٹیکس استثنی دی جائے گی جس کا مقصد بھارت میں درآمدات اور برآمدات کرنے والوں کو ایرانی فریق کے ساتھ تعاون میں آسانی پیدا کرنا ہے.
انہوں نے کہا کہ چابہار کی خطے میں پوزیشن نہایت اہم ہے. بھارت یہاں ترقیاتی منصوبوں کی تکمیل کے لئے پُرعزم ہے جس کی مدد سے ایران اور بھارت کے علاوہ علاقائی ممالک کو اچھا فائدہ ملے گا.
ایرانی سفیر نے مزید کہا کہ ایرانی کمپنیاں اب بھارت کی پیٹرو کیمیکل میں بہ آسانی سرمایہ کاری کرسکتی ہیں کیونکہ دونوں ممالک اس حوالے سے مالیاتی لین دین کے لئے مخصوص میکنزم پر کام کررہے ہیں.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@