ایرانی صوبے ہمدان کا "علیصدر" غار؛ قدرت کا ایک حیرت انگیز شاہکار

تہران، 8 جنوری، ارنا- ایران کے مغربی صوبے ہمدان میں واقع علیصدرغار دنیا کے عجائب میں سے ایک ہے جسے دیکھنے کے لئے بڑی تعداد میں سیاح ہمدان کا رخ کرتے ہیں۔

یہ تالابی غار جو خوبصورتی کے اعتبار سے لاثانی ہے شہر ہمدان کے شمال مغرب سے تقریبا 75 کلومیٹر کے فاصلے پرموجود علیصدر نامی گاوں میں واقع ہے۔ یہ غار ایرانی دارلحکومت تہران سے تقریبا 300 کلومیٹر دور ہے۔
اس غار کے اندر داخل ہوتے ہی آپ جیولوجی کے حیرت انگیز مناظر کو دیکھ کر قدرت کے معجزے کو قریب سے مشاہدہ کر سکتے ہیں۔
اگرچہ یہ غار سمندر کی سطح سے 2180 میٹر کی بلندی پر واقع ہے لیکن غار کے اندر درجہ حرارت ہر موسم میں بغیر کوئی تبدیلی تقریبا 14 ڈگری سیلسیس ہے تو اسی لئے چاہے آپ موسم گرما میں علصیدر غار کی سیر کو جائیں یا موسم سرما میں کوئی فرق نہیں پڑتا ہے سردیوں میں غار کے اندر گرم اور گرمیوں میں ٹھنڈا اور خوشگوار ہے۔
اس غار کے بارے میں ایک عجیب بات یہ ہے کہ غار کے بہت سے کونے اور لمبے ہالوں کو ابھی انکشاف نہیں کیا گیا ہے اور حتی کہ کوئی بھی نہیں جانتا کہ اس غار کا اختتام کہاں ہے۔
علیصدرغار میں واقع جھیل کی گہرائی تقریبا 14 میٹر ہے اور جھیل کی پانی اس حد تک صاف شفاف ہے کہ آپ جھیل کی تہ کو بھی بخوبی دیکھ سکتے ہیں۔ اس جھیل میں کوئی جاندار نظر نہیں آتی ہے۔
اس غار کی خصوصیات میں سے ایک یہ بھی ہے کہ اس کے بیچوں بیچ نہایت پرپیچ ہال اور حفرے موجود ہیں جس کے مختلف حصوں تک پہنچنے کے لئے کشتی کا استعمال لازمی ہے اور اس بات کی بنا پر علیصدر دنیا کا سب سے بڑا تالابی غار بن گیا ہے جس میں کشتی رانی بھی کر سکتے ہیں۔
علیصدرغار کی چھٹ بعض حصوں میں پانی کی سطح سے 10 کلومیٹر کی بلندی پر واقع ہے اور اس میں لاکھوں برسوں کے دوران پتھروں سے قدرتی طور پر مختلف شکلیں بنی ہوئی دکھائی دے رہی جن میں stalactite اور stalagmite
بھی شامل ہیں ۔غار کے دیواروں پر پتھروں سے سجے قدرتی نظارے سیاحوں کو ضرور حیران کردیتے ہیں۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@