یورپ کا انتظار نہیں، ایران اپنے روائتی پارٹنرز سے تعاون جاری رکھے گا: ظریف

نئی دہلی، 8 جنوری، ارنا – ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ہم یورپ کے ساتھ مخصوص مالیات میکنزم پر تعاون کرتے رہیں گے تاہم ایران یورپی ممالک کا زیادہ انتظار نہیں کرتا بلکہ ہم روس، چین اور بھارت جیسے اپنے روائتی شراکت دار ممالک کے ساتھ تعاون کا سلسلہ جاری رکھیں گے.

ظریف نے بھارتی وزیر جہاز رانی کے ساتھ ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اس عزم کا اعادہ کیا کہ ایران اپنی قوم کے مفادات کے حصول کے لئے روائتی شراکت دار ممالک کے ساتھ مذاکرات کررہا ہے.اس موقع پر انہوں نے یورپ کے مخصوص مالیاتی نظام SPV کے حوالے سے کہا کہ یورپیوں نے کوشش کی ہے مگر ہمارے مطالبات کے مطابق پیشرفت نہیں کرسکتے ہیں.
ظریف نے کہا کہ ہم مختلف چینلز جیسے بھارت کے ساتھ باہمی تعاون بڑھانے کے لئے کوشش کر رہے ہیں.
انہوں نے مزید کہا کہ ہم بھارت کے ساتھ مختلف موضوعات پر باہمی تعاون کرسکتے ہیں اور اس حوالے سے ایرانی اور بھارتی پاسارگاد اور یوکو بینکوں کے درمیان تجارتی تعلقات کا آغاز کیا گیا ہے.
بھارتی وزیر نقل و حمل نے کہا کہ ہم یقین رکھتے ہیں کہ وقت گزرنے کے ساتھ کامیابی حاصل ہوگی اور ایرانی چابہار بندرگاہ ہمارے لئے بہت ہی اہم ہے اور ہم اس موضوع پر سخت محنت کرتے ہیں اور جلد بعض موجودہ مشکلات حل ہوں گے اور قریب مستقبل میں یہ بندرگاہ اپنی مکمل سرگرمیوں کا آغاز کرے گی.
گاڈکاری نے کہا کہ بھارتی حکومت نے ایک ایرانی بینک کو ممبئی میں تین مہینوں کے دوران اپنی شاخ کھولنے کے لئے لائسنس دے دیا ہے جس کا مقصد مالیاتی تبادلوں کو آسان بنانا ہے.
انہوں نے کہا کہ ایرانی وزیر خارجہ نے باہمی تعاون کے لئے مختلف تجاویز پیش کی۔ اسلامی جمہوریہ ایران کو اسٹیل لوکوموٹو انجن کی ضرورت ہے.
انہوں نے ظریف کے ساتھ ملاقات کو مثبت قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس ملاقات کے ذریعہ بہت سے مسائل حل کئے جائیں گے.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@