شاہراہِ ریشم، امریکہ کے مقابلے میں ایران اور چین کے مشترکہ تعاون کا اہم ذریعہ قرار

بیجنگ، 7 جنوری، ارنا - چین عرب ایسوسی ایشن کے سیکریٹری جنرل نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور چین شاہراہِ ریشم منصوبے کے ذریعے امریکہ کی یکطرفہ پابندیوں کا مقابلہ کرنے کے لئے مشترکہ تعاون کرسکتے ہیں.

''چن شان ہوئی'' نے ارنا نیوز کے نمائدے کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ ایران اور چین شاہراہ ریشم کے ذریعے امریکی اقدامات کا مقابلہ کرسکتے ہیں.
انہوں نے کہا کہ امریکہ کے مقابلے میں شاہراہِ ریشم کا منصوبہ ایران اور چین کے مشترکہ تعاون کے مرکز میں بدل سکتا ہے.
چینی تجزیہ کار نے ایران چین تعاون کو مستقبل میں جاری رکھنے پر زور دیتے ہوئے بیجنگ حکومت سے مطالبہ کیا کہ امریکی پابندیوں کے سامنے ایران کو مدد فراہم کرے.
انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران چین کا دیرنیہ دوست ملک ہے اور یقینی طور پر چینی قیادت شاہراہ ریشم منصوبے کی تکمیل کے لئے مختلف ممالک کی شراکت داری بالخصوص ایران کے تعاون کو قدر کی نگاہ سے دیکھے گی.
چن شان ہوئی کا کہنا تھا کہ ایران مخالف امریکہ کی یکطرفہ پابندیوں کا مقصد تہران حکومت پر دباؤ بڑھان ہے جبکہ ایسے اقدامات سے مشرق وسطی کا خطہ مزید عدم استحکام کا شکار ہوگا.
انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ ایران پر یکطرفہ پابندیاں لگانے کا حق نہیں رکھتا تاہم عالمی برادری کے اجتماعی تعاون ایسی یکطرفہ پالیسیوں کی روک تھام کے لئے اہم ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@