ایران اور افغانستان باہمی تعاون کا سلسلہ جاری رکھنے کیلئے پرعزم

کابل، 5 جنوری، ارنا- نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے سیاسی امور اور افغان چیف ایگزیکٹیو نے ایک ملاقات میں دونوں ممالک کے درمیان مشترکہ تعاون کا سلسلہ جاری رکھنے پر زور دیا۔

اعلی ایرانی سفارتکار "سید عباس عراقچی" نے افغان صدر کے ساتھ ملاقات کے بعد افغان چیف ایگزیکٹیو "عبداللہ عبداللہ" کے ساتھ ملاقات اور بات چیت کی۔
ہونے والی ملاقات میں دونوں فریقین نے ایران و افغانستان کے درمیان مشترکہ تاریخی اور دوستانہ تعلقات کا سلسلہ جاری رکھنے پر زور دیتے ہوئے دونوں ممالک کے درمیان جامع سٹرٹیجک تعاون کی دستاویزات کو حتمی شکل دینے میں اہم پیش رفت حاصل ہونے کی خبر دی۔
اس موقع پر عراقچی نے کہا کہ جامع سٹرٹیجک تعاون کی کمیٹیوں میں سے تین کمیٹیوں کا کام مکمل ہوگیا ہے اور دو کمیٹیوں کے کاموں کو بھی حتمی شکل دی جار رہی ہیں۔
انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ دونوں ممالک کے درمیان جامع اسٹرٹیجک تعاون کی دستاویزات کو جلدی سے حتمی شکل دے کر ایران اور افغانستان کے حکام اس پر دستخط کریں گے۔
اعلی ایرانی سفارتکار نے افغان چیف ایگزیکٹیو کو ایرانی دارلحکومت تہران میں ایرانی حکام اور طالبان کے وفد کے درمیان حالیہ ملاقات کے بارے میں بریفینگ دی۔
انہوں نے کہا کہ طالبان کے نمائندوں کے ساتھ مذکورہ ملاقات افغان حکومت کی ہم آہنگی سے ہوئی ہے اور ہم افغان حکومت کی قیادت میں افغان امن عمل کے انعقاد کی مکمل حمایت کریں گے۔
عراقچی نے افغانستان میں قیام جمہوریت اور حالیہ پارلیمانی انتخابات کا خیر مقدم کرتے ہوئے دونوں ممالک کے درمیان بڑھتی ہوئی تجارتی حجم کے تناظر میں ایران اور افغانستان کی لین دین کو اور مزید بڑھانے کا مطالبہ کبا۔
اس موقع پر افغان چیف ایگزیکٹیو نے ایران کی جانب سے طالبان کے نمائندوں کے ساتھ حالیہ ملاقات میں اصولوں کی پابندی سمیت افغان حکومت کو ہونے والی ملاقات سے اطلاع دینے کے حوالے سے ایرانی حکام کا شکریہ ادا کیا۔
انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان دیرینہ دوستی پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ افغان حکومت، دونوں ممالک کے درمیان جامع سٹرٹیجک تعاون کی مکمل حمایت کرے گی۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@