ایران کا بارٹر سسٹم کے ذریعے قالین کی برآمدات کو جاری رکھنے پر غور

تہران، 30 دسمبر، ارنا - حالیہ امریکی پابندیوں کے بعد اسلامی جمہوریہ ایران ایک موثر بارٹر ٹرڈ سسٹم پر کام کرنا چاہتا ہے جس کی مدد سے دیگر ممالک کو اپنی قالینوں کی برآمدات کا سلسلہ جاری رکھ سکے.

یہ بات "فرشتہ دستپاک" نے اتوار کے روز ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
ایران کے قالین سنٹر کی سربراہ کے مطابق، ایران بارٹر سسٹم پر کام کرنا چاہتا ہے تا کہ وہ جن ممالک سے مصنوعات درآمد کررہا ہے انھیں ہاتھ سے بنے ہوئے ایرانی قالینوں کو برآمد کر سکے.
دستپاک نے کہا کہ ہم نے گزشتہ سال امریکہ، جرمنی، کینیڈا، جاپان اور چین کو 428 ملین ڈالر ہاتھ سے بننے ہوئے قالین برآمد کیا مگر امریکی پابندیوں کے بعد اس کی برآمدات کی تبدیلی کے لئے سنجیدہ اقدامات کیا جانا چاہیئے.
انہوں نے مزید کہا کہ ہم نے حالیہ دنوں میں ویگن درآمد کرنے والی چینی کمپنی کے ساتھ 500 ملین یورو تک بارٹر ٹرڈ سسٹم پر کام کرنے پر مذاکرات کئے ہیں.
انہوں نے کہا کہ ابھی صورتحال میں اسلامی جمہوریہ ایران کے 29 علاقے کے 54 ہاتھ سے بننے ہوئے قالین عالمی فہرست میں شامل کردئے گئے ہیں.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایران کے معیاری اور مشہور قالینوں کی اندرون اور بیرون ملک کی اہمیت کی مبنی پر یہ قالین اس ملک کے ثقافتی سفیر ہیں.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@