فلسطینیوں کیخلاف صدی کا معاہدہ حاصل نہیں ہوگا: ایران

تہران، 30 دسمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کی اعلی قومی سلامتی کونسل کے سیکریٹری نے صدی کے معاہدے کو فلطسین کے خلاف ایک بڑا دھچکا قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ مزاحمتی گروپ اور علاقے کی ہوشیار قوم اس شیطانی پالیسی کے نفاذ کو روک کریں گے.

یہ بات ایڈمیرل "علی شمخانی" نے اتوار کے روز فلسطین کی تحریک جہاد اسلامی کے سیکرٹری جنرل "زیاد النخالہ" کے ساتھ ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے اس بات پر زور دیا اور کہا کہ فلسطین اور مزاحمتی گروہوں کے آرمانوں کی مسلسل حمایت اسلامی جمہوریہ ایران کی خارجہ پالیسی کے بنیادی اصولوں میں سے ایک ہے.
شمخانی نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران ہمیشہ فلسطینی عوام کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑا رہا ہے۔ مذہبی اور انسانی عقائد کی مبنی پر یہ راستہ فلسطینی مزاحمت کی مکمل کامیابی تک جاری رکھے گا.
انہوں نے ناجائز صہیونی ریاست کے خلاف عظیم واپسی مارچ کو فلسطینی قوم کی اندرونی طاقت کی علامت قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے وطن عزیز کو چھوڑ نہیں دے گی.
النخالہ نے اسلامی جمہوریہ ایران کی جانب سے فلسطینی ارمانوں کی حمایت پر زور دیتے ہوئے فلسطین کی تحریک جہاد اسلامی کے انتخابات پر ایک رپورٹ پیش کی.
انہوں نے بعض عرب اور غیر عرب ممالک کی جانب سے فلسطینی مزاحمت کی شکست کی کوششوں پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہماری قوم گزشتہ سے زیادہ مکمل کامیابی حاصل ہونے تک اپنے راستوں کو جاری رکھے گی.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@